منگل, 24 اپریل 2018


سی پیک کو چاہ بہار بندر گاہ سے خطرہ نہیں

 

ایمز ٹی وی (گوادر)سی پیک کے مرکز گوادر پورٹ کو چاہ بہار بندرگاہ سے خطرہ ہے نہ ہی بھارت ٹرانس شپمنٹ پورٹ چلانے کی صلاحیت رکھتا ہے۔قدرتی حالات ہوں یا خطے کے معروضی اور تجارتی و ساحلی امور، شکست بھارت کا مقدر ہو گی۔میری ٹائم افئیرز کے ماہرین اور خطے کی جیو پولیٹیکل حالات سے واقف افراد کہتے ہیں کہ ایران پاکستان ہمسایہ، مستقبل دونوں کا ہے، اندرونی اور مالی مسائل سے درچار بھارت جلد چاہ بہار سے نکل جائے گا۔

بھارت کی کسی پورٹ کو دنیا میں آج تک ٹرانس شمپنٹ کا حب نہیں بنایا جا سکا، خطے میں بدلتے حالات کہہ رہے ہیں کہ سمندر اور تجارت پر حکمرانی پاکستان کی ہو گی۔

پاکستان کے ایمرجنگ کردار کو روکنے کا خواب دیکھنے والا بھارت ایران پاکستان تعلقات خراب کرنا چاہتا ہے۔گوادر ڈیپ سی پورٹ اٹھارہ میٹر گہری اورصرف ایک فیصد استعمال ہوئی ہے۔سو فیصد آپریشنل ہونے پر بحری تجارت کا سب سے بڑا حب گوادر پورٹ ہی ہو گی۔

 

پرنٹ یا ایمیل کریں

Leave a comment