پیر, 27 جنوری 2020


حکومت کے اصلاحاتی اقدامات درست سمت میں ہیں،فیچ

 
اسلام آباد : عالمی کریڈٹ ریٹنگ ایجنسی فیچ نے پاکستان کی ریٹنگ بہترکر کےبی منفی کر دی ، وزارت خزانہ کا کہنا ہے کہ فیچ نےحکومت کے اصلاحاتی اقدامات کو درست سمت میں قراردیا ہے۔
 
عالمی ریٹنگز ایجنسی فیچ نے پاکستان کی ریٹنگ جاری کر دی، جس میں پاکستان کی ریٹنگ بی اور آؤٹ لک مستحکم قرار دے دیا، وزارت خزانہ نے فیچ کی جانب سےپاکستان کی کریڈٹ ریٹنگ میں بہتری کا خیر مقدم کرتے ہوئے کہا فیچ نے پاکستان کی معیشت کو مستحکم تسلیم کرتے ہوئے ریٹنگ میں بہتری کی اور حکومت کے اصلاحاتی اقدامات کو درست سمت میں قراردیا۔
 
وزارت خزانہ کی جانب سے جاری اعلامیہ میں کہا گیا فیچ کے مطابق گزشتہ سال کا4.9 فیصد کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ امسال2.1 فیصد رہے گا اور آئندہ مالی سال تک کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ محدود ہوکر 1.9 فیصد تک ہو جائے گا۔
 
وزارت خزانہ کے مطابق ریٹنگ ایجنسی نے لچکدار ایکس چینج ریٹ اختیار کرنے اور حکومت کی ٹیکس بیس بڑھانے، ٹیکس وصولیوں میں اقدامات کی تعریف کی جبکہ حکومت کے معاشی استحکام اور ڈسپلن کیلئے اقدامات کو بھی سراہا۔
 
یاد رہے گذشتہ سال دسمبر میں موڈیز نے پاکستان کاآؤٹ لک منفی سے مستحکم کرتے ہوئے کہا تھا پاکستان کے بڑے چیلنج کرنٹ اکاؤنٹ خسارے میں مزید بہتری ہوگی، مشیر خزانہ کا کہنا تھا کہ معاشی آؤٹ لک میں بہتری حکومتی کوششوں پراعتماد کا اظہار ہے۔
 
یاد رہے گذشتہ سال نومبر میں عالمی معاشی ریٹنگ کے ادارے فچ ریٹنگز پاکستان پاکستان سے متعلق رپورٹ جاری کی تھی ، جس کے مطابق عالمی بینک کے ایزآف ڈوئنگ بزنس میں پاکستان کی بہتری قابل ستائش ہے۔
 
ریٹنگ ایجنسی کی رپورٹ میں کہا گیا تھا کہ حکومت کو درکار فنانسنگ میں بھی کمی آئی ہے، پاکستان نے ایز آف ڈوئنگ انڈیکس میں 28 درجے بہتری دکھائی، پاکستان کا شمار سب سے زیادہ بہتری دکھانے والے 10ممالک میں ہوا۔

پرنٹ یا ایمیل کریں

Leave a comment