جمعہ, 20 جولائی 2018


17 نوجوانوں کی شہادت، وادی کشمیر سوگ میں ڈوب گیا

 

ایمزٹی وی() مقبوضہ کشمیر میں 17 نوجوانوں کی شہادت کے بعد کشمیر میں آج دوسرے روز بھی مکمل ہڑتال ہے جب کہ کشمیر کے جنوبی علاقوں میں کرفیو نافذ ہے۔
مقبوضہ کشمیر میں سرچ آپریشن کے نام پر بھارتی سیکیورٹی فورسز کے ہاتھوں 17 نوجوانوں کی شہادت پر حریت رہنماؤں کی اپیل پر کشمیری سراپا احتجاج ہیں اور وادی بھر آج دوسرے دن بھی مکمل ہڑتال کی جارہی ہے۔ تمام اسکول، کالجز اور جامعات بند ہیں جب کہ تجارتی سرگرمیاں معطل ہیں۔ دوسری جانب کٹھ پتلی انتظامیہ نے ممکنہ احتجاج سے بچنے کے لیے کشمیر کے جنوبی حصوں میں کرفیو نافذ کر رکھا ہے۔
کٹھ پتلی انتظامیہ نے حریت پسند رہنماؤں سید علی گیلانی اور میر واعظ عمر فاروق کو گھروں میں بدستور نظر بند کر رکھا ہے جب کہ یاسین ملک کو تین روزہ ریمانڈ پر سری نگر کی سینٹرل جیل بھیج دیا گیا ہے۔ حریت پسند رہنماؤں کے اعلان پر شہیدوں سے اظہار یک جہتی کے لئے کل شوپیاں تک بھارت مخالف احتجاجی مارچ بھی کیا جائے گا۔
واضح رہے کہ یکم اپریل کو بھارتی سیکیورٹی فورسز نے مقبوضہ کشمیر کے علاقوں شوپیاں اور اسلام آباد کے اضلاع میں سرچ آپریشن کیا اور جارحیت و بربریت کی تاریخ رقم کرتے ہوئے 17 کشمیری نوجوانوں کو شہید اور 100 سے زائد کو زخمی کردیا تھا۔

 

پرنٹ یا ایمیل کریں

Leave a comment