جمعہ, 26 فروری 2021


کم سن گھریلو ملازمہ پر مبینہ تشدد کا ڈراپ سین ہو گیا

ایمز ٹی وی(اسلام آباد) کم سن گھریلو ملازمہ پر مبینہ تشدد کا ڈراپ سین ہو گیا ، بچی کے والدین نے تشدد کرنے والے حاضر سروس جج سے راضی نامہ کر لیا ۔

اسلام آباد میں مبینہ تشدد کا نشانہ بننے والی کم سن طیبہ کے والدین نے حج سے راضی نامہ کر تے ہوئے اپنا بیان خلفی عدالت میں جمع کرا دیا ہے جس کے بعد عدالت نے جج کی اہلیہ کی ضمانت منظور کرلی ۔


بچی کے والدنے اپنے بیان حلفی میں کہا ہے کہ انہوں نے کسی دباﺅ کے بغیر راضی نامہ کیا ہے اور جج کو معاف کر دیا ہے ۔”مقدمے میں جج کو فی سبیل اللہ معاف کر دیا ہے “۔ جج کو بری یا ضمانت دینے پر مجھے کوئی اعتراض نہیں ۔

ایڈیشنل اینڈ سیشن جج راجہ آصف محمود نے بیان حلفی کے بعد حاضر سروس جج کی اہلیہ کی ضمانت 30ہزار کے مچلکوں کے عوض منظور کر لی ہے ۔


یاد رہے گھریلو ملازمہ طیبہ اسلام آبادمیں ایک حاضر سروس جج کے گھر ملازمہ ہے جہاں اسے مبینہ تشدد کا نشانہ بنایا گیا تھا تاہم بچی کے والدین کا پتہ چلانے کیلئے ابھی تک متاثرہ لڑکی کا ڈی این اے بھی نہیں کرایا جا سکا

پرنٹ یا ایمیل کریں

Leave a comment