ھفتہ, 24 اگست 2019


افغانستان کی طرف سے بارڈر مینجمنٹ کمزور ہے، ڈی جی آئی ایس پی آر

 

 
ایمزٹی وی(راولپنڈی )ڈی جی آئی ایس پی آر نے راولپنڈی میں پریس کانفرنس کی۔
کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل آصف غفور نے کہا کہ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں 70 ہزار سے زائد پاکستانیوں نے جان دی، پاکستان نے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں ہر کارروائی کی ہے، فاٹا میں دہشت گردوں کی پناہ گاہوں کا خاتمہ کردیا گیا ہے، زیادہ تر دہشت گرد مارے گئے ہیں یا افغانستان میں روپوش ہوگئے، ٹی ٹی پی کی قیادت بھی افغانستان میں ہے، دہشت گردی کے خلاف جاری آپریشن ضرب عضب کے نتیجے میں ہم امن و امان کے بہتر ماحول میں سانس لے رہے ہیں، امن کی فضا وقت کے ساتھ بہتر ہورہی ہے، دہشت گردی کے خلاف جنگ میں کامیابیوں میں تمام اداروں کا حصہ ہے۔ قبائلی علاقوں سے نقل مکانی کرنے والے 84 فیصد شہری اپنے علاقوں میں واپس جاچکے ہیں، کومبنگ آپریشنز جاری رہیں گے تاکہ بچے کچے دہشت گردوں کا بھی صفایا کیا جاسکے۔
افغانستان کی صورتحال پر ڈی جی آئی ایس پی آر کا کہنا تھا کہ ہمیں افغانستان میں امن و امان کی صورت حال پر تشویش ہے اور ہماری خواہش ہے کہ افغانستان میں جلد امن قائم ہو تاکہ افغان مہاجرین واپس جاسکیں۔ پاکستان اپنی سرزمین کسی بھی ملک کے خلاف استعمال نہیں ہونے دے گا، پاک افغان سرحد پر ایف سی کے مزید 29 ونگز بنائے گئے ہیں ، ہمیں اپنی طرف کا کام کرنا ہے اور افغانستان کو اپنی طرف کا کام کرنا ہے، افغانستان کی طرف سے بارڈر مینجمنٹ کمزور ہے۔

 

پرنٹ یا ایمیل کریں

Leave a comment