اتوار, 25 اکتوبر 2020


حجاب کا فروغ ملک کے لئے جگ ہنسائی کا باعث ہوگا

 

ایمزٹی وی(اسلام آباد) ممبر سندھ اسمبلی مہتاب اکبر راشدی نے پنجاب حکومت کی فروغ حجاب پالیسی کے حوالے سے اپنے ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے فیصلے کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا اور کہا کہ حجاب کا فروغ ملک کے لئے جگ ہنسائی کا باعث ہوگا۔
میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ممبر سندھ اسمبلی کا کہنا تھا کہ مذہب کو حاضری سے مشروط کیا جارہا ہے۔ مذہب کو مذاق بنانا اور حاضری سے مشروط کرنا ٹھیک نہیں۔ لڑکیوں کے ساتھ امتیازی سلوک برتا جا رہا ہے اگر لڑکیاں حجاب کریں گی تو لڑکوں کو بھی ٹوپی پہنانے کے احکام دئیے جائیں ۔
اس طرح کے اقدامات جگ ہنسائی کا باعث بنتے ہیں ۔ حکومت نے مختلف حوالوں سے مذہب کو مذاق بنادیا ہے۔
واضح رہے کہ پنجاب کے وزیر ہائیر ایجوکیشن سید علی رضا گیلانی نے صوبے کے کالجز میں حجاب کے فروغ کی سفارشات پیش کرتے ہوئے اعلان کیا تھا کہ جو طالبات حجاب کریں گی انہیں پانچ فیصد اضافی نمبرز دئیے جائیں گے۔ اس فیصلے کے خلاف میڈیا اور سوشل میڈیا پر ایک نئی بحث چھڑ گئی ہے۔ ایک جانب اس عمل کو سراہا جا رہا ہے تاہم چند لوگ اس فیصلے کو تنقید کا نشانہ بنا رہے ہیں۔
 

 

پرنٹ یا ایمیل کریں

Leave a comment