بدھ, 28 اکتوبر 2020


سزائےمو ت کے4 قید ی سپر یم کورٹ سے بری

 

ایمزٹی وی( اسلا م آبا د)سپر یم کو ر ٹ نے قتل کے مقد ما ت نمٹا تے ہو ئے 4 ملز ما ن کو19سا ل بعد رہا کر نے کا حکم دے دیا ۔ پہلے مقد ے میں ملز ما ن محمد اقرار ،خا لد حسین اور شاکر علی پر ملتا ن کی نو احی بستی مبا رک پو رہ میں 3ا فراد کو قتل کرنے کا ا لزام تھا ۔
گر فتا ری کے و قت 3ملز مو ں کی عمر یں 22،22 سا ل تھیں جبکہ 2 ملز م طا لب علم تھے، جسٹں آصف سعید کھو سہ کی سر بر اہی میں 3ر کئی بنچ نے 20 مئی 2007کو گا ر ڈ ن ٹا ﺅ ن میں جا پا نی لٹر کیو ں کے گینگ ریپ کے الزام میں گر فتا ر ملز ما ن عا د ل منصو ر اور فہد ر ا ہی کو 10 سا ل بعد ر ہا کر د یا ۔ عد ا لت نے قر ا ر د یا کہ ا یف آئی آر 5 د ن بعد درج کی گئی اور مو قع کا کو ئی گو ا ہ مو جو د نہیں تھا جبکہ میٹد یکل ر پو ر ٹ سے جر م کی تصد یق نہیں ہو سکی ۔ عد ا لت نے قتل کیس میں ملز م محمد ر ہ یا ض کی سزائے مو ت عمر قید میں تبد یل کر د ی اور قر ا ر د یا کہ یہ 2001 کا مقد مہ ہے ،ا مید ہے کہ ملز م ا پنے گھر چلا جا ئے گا ۔
جبکہ تسیر ے مقد مے کے ملز م غو ث بخش کو بھی عد م ثبو ت کی بنیا د پر رہا کر د یا ،اے پی پی کے مطابق ڈو ثیر ن بینچ نے نا ن رجسٹر ڈ و کیل کو کا لت کی ا جا ز ت د نیے کے متعلق ا سلا م آ با د ہا ئیکو ر ٹ کے فصیلہ کیخلاف ا پیل کی سعا عت صد ر سپر یم کو ر ٹ کی در خو ا ست پر ملتو ی کر د ی ۔

 

پرنٹ یا ایمیل کریں

Leave a comment