پیر, 26 اکتوبر 2020


عدالت کو کارروائی سے نہیں روکا جا سکتا،چیف جسٹس

 

ایمز ٹی وی (اسلام آباد ) سپریم کورٹ میں جہانگیرترین کے خلاف نا اہلی کیس کی سماعت میں چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے ہیں کہ سپریم کورٹ کے اختیارات کو محدود نہیں کیا جاسکتا، معاملہ کسی اور جگہ زیر التوا ہے تو بھی عدالت کو غور سے نہیں روکا جاسکتا۔ تحریک انصاف کے رہنما جہانگیر ترین کے خلاف نااہلی کیس کی سماعت سپریم کورٹ میں ہوئی۔

چیف جسٹس میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں 3 رکنی بینچ نے مسلم لیگ ن کے رہنما حنیف عباسی کی درخواست پر سماعت کی۔ دوران سماعت جہانگیر ترین کے وکیل نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ ایک ریفرنس لاہور ہائیکورٹ میں زیرالتوا ہے،

سپریم کورٹ کی سماعت سے جہانگیرترین کے حقوق متاثر ہوں گے،

ہم وہ ریفرنس واپس لے سکتے ہیں۔ جہانگیر ترین کے وکیل کے دلائل پر چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ سپریم کورٹ کے اختیارات کو محدود نہیں کیا جاسکتا، اگر معاملہ کسی اور جگہ زیر التوا ہے تو بھی عدالت کو غور سے نہیں روکا جاسکتا۔ سپریم کورٹ نے گزشتہ سماعت پر ساڑھے 18 ہزار سے زائد سرکاری زمین لیز پر لینے کا ریکارڈ ناکافی قرار دیا تھا۔ سپریم کورٹ نے قرار دیا تھا کہ ایسے معاہدے مشکوک اور زمینیں بےنامی ہوتی ہیں جب کہ معزز عدالت نے تحریک انصاف کے رہنما جہانگیر ترین کو زمینوں کا مکمل ریکارڈ فراہم کرنے کا حکم دیا تھا۔

 

پرنٹ یا ایمیل کریں

Leave a comment