ھفتہ, 15 مئی 2021


خواجہ سعد رفیق کے حلقے میں دھاندلی ثابت ہوگئی

ایمز ٹی وی (اسلام آباد) عام انتخابات میں خواجہ سعد رفیق کے حلقے میں دھاندلی ثابت ہوگئی ۔ الیکشن کمیشن نے این اے 125 میں دھاندلی ثابت ہونے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ این اے 125 میں دوبارہ انتخابات کروائے جائیں گے ۔ ٹریبونل کے مطابق حلقے کے 265 پولنگ اسٹیشنز میں سے 7 میں بے ضابطگیاں پائی گئیں اس لئے تمام امیدواراپنے کاغذات نامزدگی جمع کرائیں گے اور اس حلقے سے خواجہ سعد رفیق اب ممبر قومی اسمبلی نہیں رہے۔ جبکہ خواجہ سعد رفیق نے میڈیا  سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ الیکشن ٹریبونل کے فیصلے میں کہیں یہ نہیں کہا گیا کہ این اے 125 میں دھاندلی کی گئی بلکہ پریزائڈنگ اور ریٹرنگ افسران کو قصور وار ٹہرایا گیا ہے۔ الیکشن ٹریبونل کے ججز نے پریزائڈنگ اور ریٹرنگ افسران کی سزا مجھے اور میرے حلقے کے عوام کو دی ہے، ہم سپریم کورٹ جانے کا حق رکھتے ہیں لیکن اس حوالے سے پارٹی مشاورت کے بعد فیصلہ کریں گے، میں عوام میں جانے کے لئے بھی تیار ہوں۔جبکہ تحریک انصاف کے رہنماء حامد خان نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ  آج الیکشن ٹریبونل نے تحریک انصاف کے حق میں فیصلہ دیا ہے انہوں نے کہا کہ باقی تین حلقوں کا فیصلہ بھی تحریک انصاف کے حق میں آئے گا۔واضح رہے کہ لاہور کے حلقہ این اے 125 میں پاکستان مسلم لیگ (ن) کے رہنما خواجہ سعد رفیق ایک لاکھ 23 ہزار416 ووٹ کےساتھ کامیاب ہوئے تھے جب کہ ان حریف تحریک انصاف کے رہنما حامدخان 84 ہزار495 ووٹ حاصل کر کے دوسرے نمبر پرتھے۔

 

پرنٹ یا ایمیل کریں

Leave a comment