جمعہ, 21 فروری 2020


فاٹا اصلاحات پرایک اور کوشش،حکومت کیاکرنے والی ہے

 

ایمزٹی وی(اسلام آباد)وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے سینیٹ اورقومی اسمبلی میں سیاسی جماعتوں کے پارلیمانی رہنماؤں کااہم اجلاس کل طلب کرلیاہے جس کا مقصد قومی اسمبلی میں حکومت کے فاٹااصلاحات بل پراپوزیشن کے تحفظات دوراورسینیٹ میں انتخابی حلقوں کی دوبارہ حدبندی پراتفاق رائے پیداکرنے کیلیے کوشش کرناہے۔
فاٹا اصلاحات پر قانون سازی کی حمایت نہ کرنے اوراس سے متعلق بل قومی اسمبلی میں پیش نہ کرنے پرسیاسی اورعوامی حلقوں میں شدید تنقیدکاسامناہے۔ ن لیگ کے قابل اعتمادذرائع کے مطابق اجلاس میں وزیراعظم اپوزیشن جماعتوں کو یقین دلائیں گے کہ حکومت فاٹااصلاحات پرقانون سازی کیلیے سنجیدہ ہے اورتکنیکی مسائل کی وجہ سے بل اسمبلی میں پیش نہیں کیاگیا۔
ذرائع نے بتایاکہ وزیراعظم فاٹااصلاحات اور انتخابی حلقوں کی نئی حدبندی پرقانون سازی کے جلدحق میں ہیں۔ ن لیگ کے ایک رکن پارلیمان نے دعویٰ کیاہے کہ حکومت نے مولانافضل الرحمن اورمحمود اچکزئی کی فاٹااصلاحات پرمخالفت کو مسترد کرنے کافیصلہ کیاہے۔
ذرائع نے فاٹاکے خیبرپختونخوامیں انضمام سمیت اصلاحات کیلیے وسیع ترعوامی اورسیاسی حمایت کاحوالہ دیتے ہوئے کہاکہ اچکزئی کی پارٹی کا خیبرپختونخوا اسمبلی میں کوئی رکن نہیں ہے جبکہ پارلیمنٹ میں بھی اچکزئی اور مولانافضل الرحمن کی پارٹیوں کے بہت تھوڑے ارکان ہیں۔

 

پرنٹ یا ایمیل کریں

Leave a comment