بدھ, 20 نومبر 2019


بھارتی جاسوس کوکیوں رہا کیا گیا؟؟ دفترخارجہ نے وجہ بتادی

سلام آباد: دفتر خارجہ کے ترجمان ڈاکٹر فیصل کامیڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہنا ہے کہ بھارتی جاسوس حامد نہال انصاری کو سزا مکمل ہونے پر رہا کیا گیا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ حامد نہال انصاری غیر قانونی طور پر پاکستان میں داخل ہوا تھا، اسے بغیر دستاویزات اور جاسوسی کے الزامات پر سزا ہوئی تھی۔
ترجمان دفتر خارجہ نے مزید کہا کہ بھارتی جاسوس حامد انصاری پاکستان مخالف سرگرمیوں میں ملوث تھا،اب سزا مکمل ہونے پر اسے بھارت واپس بھیجا جا رہا
واضح رہے کہ حامدنہال انصاری نامی بھارتی جاسوس کو 3 سال کے بعد سزا مکمل ہونے پر رہا کیا گیا ہے، نومبر 2012ءمیں یہ شخص دہلی سے کابل پہنچا تھا۔
وہ کابل سے براستہ سڑک جلال آباد سے ہوتا ہوا طورخم بارڈر سے حمزہ نام کی جعلی دستاویزات پر پاکستان میں داخل ہوا، جہاں سے بس کے ذریعے راولپنڈی پہنچا، جس کے بعد کوہاٹ روانہ ہوا اور جعلی دستاویزات پر ہی اس نے ہوٹل میں قیام کیا۔
حامد انصاری کو 14 نومبر 2012ءکو مشکوک سرگرمیوں کی وجہ سے حراست میں لیا گیا،جنوری 2014ء میں بھارتی ہائی کمیشن کو حامد انصاری کی گرفتاری کے حوالے سے مطلع کیا گیا۔
جاسوسی اور بغیر دستاویزات سفر کرنے کے جرم میں سزا پانے والے بھارتی قیدی حامد نہال انصاری کو مردان جیل سے رہا کر دیا گیا ہے، جس کے بعد اسے واہگہ بارڈر پر بھارت کے حوالے کیا جائے گا۔
 

 

 

پرنٹ یا ایمیل کریں

Leave a comment