اتوار, 29 مارچ 2020


نیشنل ایکشن پلان ںےدستاویزات پیش کردی!

ایمزٹی وی(اسلام آباد) نیشنل ایکشن پلان نے مکمل رپورٹ جاری کردی۔ذرائع کے مطابق نیشنل ایکشن پلان کے تحت ملک میں 9خصوصی عدالتیں قائم کیں جن کو 73مقدمات بھیجے گئے تمام عدالتوں کیلیے مجسٹریٹ نامزد کر دیے گئے ہیں ۔لاؤڈاسپیکر کے غلط استعمال پر 8925افراد کیخلاف کیس بنائے گئے،2163کوگرفتارکیاگیا ۔ دہشت گردوں کو فنڈ ٹرانسفر کی مد میں ایف ای آر اے یا حوالہ ہنڈی کے214کیسز بنائے گئے اور 322افراد کوگرفتارکیاگیا ۔35کروڑ 65ڈالرریکورکیے گئے۔ اینٹی منی لانڈرنگ میں 137لوگوں کو گرفتارکیا گیا ۔ دستاویزات کے مطابق 254 مشکوک اور غیر رجسٹرڈ مدارس بندکیے گئے ہیں،بیرونی فنڈنگ والے مدارس کی بھی نشاندہی ہوئی۔ پاکستانی مدارس میں غیرملکی طلبہ پر پابندی عائد کی گئی۔ کالعدم تنظیموں کی نقل و حمل اور سرگرمیوں پر پابندی عائد ہے ۔9کروڑ83لاکھ غیر رجسٹر سمیں بلا ک کی گئی ہیں۔ نیشنل ایکشن پلان کے تحت سوشل میڈیا کو بلا ک کرنے کیلیے قوانین میں ترمیم کی جا رہی ہے۔ کالعدم تنظیموں کی933یو آر ایل اور 10ویب سائٹ بند کی گئی ہیں۔ نفرت انگیز تقریریں کرنے اور مواد تقسیم کرنے پر2333افراد کیخلاف کیس بنائے گئے اور2163کو گرفتار کیا گیا جبکہ پنجاب میں1132خطرناک اور مشتبہ دہشت گردوں کی شناخت کی گئی ہے 405کو شیڈول چار میں ڈالا گیا ہے ۔دہشت گردوں کے649 معاونت کاروں کیخلاف بھی کارروائی ہوئی ہے۔کراچی آپریشن میں ٹارگٹ کلنگ میں 53فیصد، قتل کی وارداتوں میں 50فیصد ، دہشت گردی میں 80فیصد ، راہزنی میں 30فیصد ، بھتہ خوری میں56فیصد کمی واقع ہوئی ہے۔ 69179افراد کو گرفتارکیاگیا ہے ۔گرفتار شدہ دہشت گردوں کی تعداد890ہے ۔ مفرورووں کی تعداد 676ہے، گرفتار اغواکاروں کی تعداد124 اور بھتہ خور545ہیں ۔ قتل کے واقعات میں ملوث 1834لوگ گرفتار ہیں ۔126730آپریشن کیے گئے ہیں ان میں92848افراد کو گرفتارکیاگیا ہے، 6442خفیہ آپریشن کیے گئے ہیں۔

پرنٹ یا ایمیل کریں

Leave a comment