اتوار, 23 ستمبر 2018


کمسن طالبہ زندگی کی بازی ہار گئی

 

ایمز ٹی وی(ملتان) استاد کے ہاتھوں بد ترین تشدد کا نشانہ بننے والی کمسن طالبہ سات روز تک زندگی اور موت کی کشمکش میں مبتلا رہنے کی بعد زندگی کی بازی ہار گئی۔
ملتان کے محلے قادرپورہ میں مدرسے کے استاد کے استاد نے آٹھ سالہ ماہ نور فاطمہ کو بدترین تشدد کا نشانہ بنایا تھا ، جس کے سبب بچی کا جسم مفلوج ہوگیا تھا۔
ماہ نور کو علاج کے لیے نشتر اسپتال منتقل کیا گیا جہاں سات روز تک متاثرہ بچی زندگی اور موت کی کشمکش میں مبتلا میں رہنے کے بعد بالاخر آج دم توڑگئی۔
بچی کی ہلاکت پر ورثا ء نے احتجاج کرتے ہوئے نشتر روڈ بلاک کردی، ورثا ء کا کہنا ہے کہ ڈاکٹروں کی مبینہ غفلت سے ان کی بچی کی جان گئی۔ ورثاء نے چیف جسٹس سے نوٹس لینے کی اپیل کی تھی۔
ملتان کےڈپٹی کمشنر نے واقعے کی تحقیقات کے لیے کمیٹی بنادی ہے جبکہ ان کا یہ بھی کہنا ہے کہ بچی کے علاج میں اگر نشتر اسپتال کے کسی ڈاکٹر نے غفلت برتی ہوگی تو اسے قرار واقعی سزا دی جائے گی۔
تاحال بچی پر تشدد کرنے والے استاد کے بارے میں کسی قسم کی کارروائی تاحال عمل میں نہیں لائی جاسکی ہے۔ لواحقین کا کہنا ہے کہ نشتر اسپتال نے تاحال بچی کی میڈیکل رپورٹ جاری نہیں کی ہے جس کے سبب مذکورہ مدرس کے خلاف کارروائی عمل میں نہیں لائی جاسکی۔

 

پرنٹ یا ایمیل کریں

Leave a comment