جمعہ, 21 فروری 2020


امام بارگاہ پرکریکرحملےمیں پولیس افسرسمیت5 افراد قتل

امیزٹی وی:(کراچی) ایس پی گلشن اقبال عابد قائمخانی بتایا کہ زخمی ہونے والا پولیس افسر بھی گلشن اقبال بلاک 5 میں واقع امام بارگاہ مدینۃ العلم پر سیکیورٹی ڈیوٹی انجام دینے کے بعد تھانے میں اندراج کرانے کے بعد اپنے گھر جا رہا تھا ،دونوں وارداتوں میں ایک ہی گروپ کے ملوث ہونے کا امکان ہے ، پیر آباد کے علاقے قصبہ کالونی سے ملحقہ اسلامیہ کالونی میں گھر کے باہر بیٹھے ہوئے45 سالہ جان محمد کو موٹر سائیکل سوار نامعلوم ملزمان نے فائرنگ کرکے ہلاک کر دیا اور موقع سے فرار ہوگئے ، پولیس واقعہ کو ذاتی رنجش کا شاخسانہ قرار دے رہی ہے۔ گلستان جوہر کے علاقے کامران چورنگی بلاک 4 مغل ہزارہ گوٹھ کے قریب واقع مسجد و امام بارگاہ وحدت المسلمین کے قریب موٹر سائیکل سوار ملزمان کریکر پھینک کر فرار ہوگئے جو زور دار دھماکے سے پھٹ گیا اور اس کی آواز دور تک سنائی دی،کریکر حملے میں کوئی جانی نقصان نہیں ہوا تاہم سڑک کے کنارے قائم سبیل پر بیٹھا ہوا کفایت علی زخمی ہوگیا ۔

واقعے کی اطلاع ملتے ہی ایس پی گلشن اقبال عابد قائمخانی پولیس کی بھاری نفری کے ہمراہ موقع پر پہنچ گئے اور فوری طور پر علاقے کو اپنے گھیرے میں لیکر بم ڈسپوزل اسکواڈ کو طلب کرلیا اس موقع پر امام بارگاہ میں موجود عزاداروں کی بڑی تعداد جمع ہوگئی اور واقعہ پر اپنے شدیدغم و غصے کا اظہارکیا ، ایس ایچ او گلستان جوہر حیات اﷲ نے بتایا کہ جس وقت موٹر سائیکل سوار کریکر پھینک کر فرار ہوئے قریب ہی واقع امام بارگاہ میں مجلس کے بعد دعا کی جا رہی تھی جس میں عزاداروں کی بڑی تعداد موجود تھی ، انھوں نے بتایا کہ دھماکے سے مٹی میں گڑھا پڑ گیا ، ایس پی گلشن اقبالنے بتایا کہ موٹر سائیکل سوار دہشت گردوں کی جانب سے پھینکے جانے والا کریکر دیسی ساختہ تھا اور اس حوالے سے بی ڈی ایس کا عملہ مزید تحقیقات کر رہا ہے جبکہ شبہ ہے کہ مذکورہ واقعہ میں وہی گروہ ملوث ہے جس نے دو روز قبل عائشہ منزل فلائی اوور کے اوپر سے آئی آر سی امام بارگاہ پر دستی بم پھینکا تھا۔

پرنٹ یا ایمیل کریں

Leave a comment