اتوار, 29 مارچ 2020


اندرون سندھ بچوں میں ایچ آئی وی کی وبا

لاڑکانہ: لاڑکانہ کی تحصیل رتو ڈیرو کے 13 بچوں میں ایچ آئی وی پازیٹیو آنے کے بعد انچارج ایچ آئی وی ایڈز کنٹرول پروگرام نے نوٹس لے لیا۔

تحصیل رتو ڈیرو کے 16 بچوں کے خون کے نمونے ایچ آئی وی کی تشخیص کے لیے لیبارٹری بھیجے گئے جن میں سے 13 بچوں میں ایڈز وائرس ہونے کی تصدیق ہوئی ہے۔ 

انچارج پیتھالوجسٹ پی پی ایچ آئی جیکب آباد ڈاکٹر عبدالحفیظ کے مطابق متاثرہ بچوں کی عمریں 4 ماہ سے 8 سال تک کے درمیان ہیں اور بچوں میں آلودہ خون منتقل ہونے سے بلڈ ٹیسٹ ایچ آئی وی پازیٹو ہوسکتا ہے۔

سرکاری اعداد و شمار کے مطابق صرف لاڑکانہ میں ایڈز کے رجسٹرڈ مریضوں کی تعداد 2400 سے زائد ہے جو سندھ کے تمام اضلاع میں سب سے زیادہ ہے۔ 

دوسری جانب انچارج ایچ آئی وی ایڈز کنٹرول پروگرام ڈاکٹر سکندر میمن کا کہنا ہے کہ تمام بچوں اور ان کے والدین کے تصدیق شدہ کٹس سے آج ہی دوبارہ ٹیسٹ کرائے جائیں گے، کبھی کبھار ناقص کٹس غلط رپورٹس بھی دیتی ہیں۔

ڈاکٹر سکندر میمن کا مزید کہنا تھا کہ سندھ میں ایچ آئی وی وائرس کے اندازاً ایک لاکھ سے زائد مریض ہیں اور تمام رجسٹرڈ مریضوں کو دوائیں ملتی ہیں، پروگرام کا فوکس جنرل پاپولیشن پر نہیں، مخصوص گروپس پر ہے۔

پرنٹ یا ایمیل کریں

Leave a comment