ھفتہ, 07 دسمبر 2019


بھارتی فورسزکانہتےکشمیری مظاہرین پرسفاکانہ روایت برقرار

سری نگر: بھارتی جبر اور بدترین کرفیو کے باوجود گزشتہ روز نمازِ جمعہ کے بعد مقبوضہ کشمیر میں بھارت مخالف مظاہرے کیے گئے۔ کشمیر میڈیا سروس کے مطابق یہ مظاہرے سری نگر، بڈگام، گندربل، اسلام آباد، پلوامہ، کلگام، شوپیاں، باندیپورہ، بارہ مولہ، کپواڑہ اور مقبوضہ وادی کے مختلف علاقوں میں کیے گئے۔

مظاہرین کشمیر کی آزادی کے حق میں اور بھارت مخالف نعرے لگا رہے تھے۔

بھارتی فورسز نے اپنی سفاکانہ روایات برقرار رکھتے ہوئے ان نہتے مظاہرین کے خلاف طاقت کا بے رحمانہ استعمال کیا جس سے کئی مقامات پر مظاہرین شدید زخمی بھی ہوئے۔

قابض بھارتی فوج نے اس جمعے کو بھی سری نگر کی تاریخی جامعہ مسجد میں نمازِ جمعہ کی اجازت نہیں دی جبکہ مقبوضہ وادی کی دیگر مرکزی مساجد بھی 5 اگست سے نافذ ہونے والے کرفیو کے مسلسل 17 ویں ہفتے میں بھی بند رہیں۔

مقبوضہ کشمیر کے مسلم اکثریتی علاقوں میں اس وقت بھی زندگی کے معمولات شدید متاثر ہیں۔ فون اور انٹرنیٹ تک رسائی انتہائی محدود ہے جبکہ روزمرہ اشیائے ضرورت اور دواؤں کی قلت سے ان علاقوں میں بدترین انسانی المیہ جنم لے چکا ہے

پرنٹ یا ایمیل کریں

Leave a comment