بدھ, 17 اپریل 2024


کوئٹہ میں طلباکےاحتجاج پرپولیس حملےکی شدیدمذمت

کراچی: ٹائم اسکیل گروپ کے اراکین نےپی ایم سی کی بے ظابطگیوں کے خلاف کوئٹہ میں طلباکےاحتجاج پر پولیس حملے کی شدید مذمت کی ہے۔

ٹائم اسکیل گروپ کےچیئرمین محمد ظفر یارخان اراکین جہاں آ را،ڈاکٹر محمد طیب،ڈاکٹرممتازعمر،منیر عالم خان ، عمران خان قادری ، محمدکاشف ، ڈاکٹر نوید الرب،غلا م محمد، محمود سلطان،عبد الرحیم ،شا زیہ قادر ، عدنان خان، یاسمین صدیقی ، ضیا ءخلجی ، شاہد علی خان،ڈاکٹرندیم بیگ ،عظمی وقا ر، مسرت جہاں، صاحبزادہ حسنین ،محمد شعیب، محمد نعیم ،اقبا ل شیخ، سید فیضان علی ،مشکور حسین خاصخیلی،نوید انجم ،سید کراررضا ،توصیف احمد، عبد الرشید اور عا مرسیال نے کوئٹہ میں طلباءکے ساتھ ہونے والے نارواسلوک اور پاکستان میڈیکل کمیشن کی جانب سےہونے والی بے ضابطگیوں کےخلاف احتجاج کرنے والے طلباءپرگزشتہ روز بدترین لاٹھی چارج کیے جا نے اور 75سے زائد طلباءکو حراست میں لیےجانے کی شدیدالفاظ میں مذمت کی ۔

 ایم ڈی کیٹ ٹیسٹ آن لائن منعقد کرانے پرطلباکااحتجاج 

اراکین ٹائم اسکیل گروپ کے طلبا ءکے پرامن احتجاج پر پو لیس کی جا نب سے وحشیانہ لا ٹھی چارج کیا گیا،جس سے کئی طلباءشدید زخمی ہو ئے، جس کی جتنی مذمت کی جا ئے وہ کم ہے۔ٹا ئم اسکیل گروپ کے اراکین نے کہا کہ طلباءپر اس طرح کے بہیمانہ تشدد کو کسی صورت برادشت نہیں کیا جا سکتا۔ٹائم اسکیل گروپ کے اراکین نے سوال کیا کہ طلباءپر وحشیا نہ لا ٹھی چا رج اور تشددکا حکم کس نے دیا ؟؟ ٹا ئم اسکیل گروپ کے اراکین نے کہا کہ ہم طلباءکے پرامن مظا ہرے پرپو لیس کی جانب سے طلباءپر کیے جا نے والے بدترین تشدداور طلباءکو گرفتار کر کے انھیں ہتھکڑیاں لگا ئے جا نے کی بھرپورمذمت کرتے ہیں۔

لاہور میں بھی طلبا پی ایم سی کےخلاف سڑکوں پر

میڈیکل کے یہ طلباءہما را مستقبل ہیں ان طلبا ءکے ساتھ بلوچستان حکومت کی انتظامیہ کا ایساشرمناک سلوک ناقابل برداشت ہے۔ٹا ئم اسکیل گروپ کے اراکین بلوچستان حکومت سے مطا لبہ کرتےہیں کہ طلباءکے تما م جائز مطالبات تسلیم کیےجا ئیں،تمام گرفتارطلباءکوفی الفور رہاکیاجائے، طلباءپر وحشیانہ لا ٹھی چارج اور تشدد کر نے والے اہلکا روں اور دیگر ذمہ داران کے خلاف سخت کاروائی کی جائے۔پاکستان میڈیکل کمیشن کی جانب سے کی جانے والی بے ضابطگیوں کےخلاف فوری طورپر تحقیقاتی کمیٹی قائم کی جائے اور طلبا ءکے سا تھ ہو نے والی زیادتیوں کا فوری ازالہ کیا جائے۔

پرنٹ یا ایمیل کریں

Leave a comment