پیر, 30 نومبر 2020


دہشت گردی کے خلاف ایکشن پلان پارلیمانی کمیٹی کا پہلا اجلاس آج ہوگا 

ایمزٹی وی(اسلام آباد) دہشت گردی کے خاتمے کے لیے ایکشن پلان بنانے کی خاطر پارلیمانی کمیٹی کا پہلا اجلاس آج پارلیمنٹ ہاؤس میں ہورہا ہے۔ وزیر داخلہ چودھری نثار علی خان کی صدارت میں بننے والی کمیٹی میں لگ بھگ تمام پارلیمانی جماعتوں کی نمایندگی شامل ہے۔ سانحہ پشاور کے بعد حکومت نے فیصلہ کیا کہ ایک ہفتے میں ایکشن پلان بنالیا جائے۔ اس ایکشن پلان کو بنانے کے لیے وزیر داخلہ چودھری نثار کی سربراہی میں ایک کمیٹی بنائی گئی ہے جس میں تمام پارلیمانی جماعتوں کی نمایندگی ہوگی۔ اس پارلیمانی کمیٹی کا پہلا اجلاس آج اسلام آباد میں ہوگا کمیٹی کے لیے اب جن پارٹیوں نے اپنے نماءندوں کےنام بھیج دیئے ہیں۔ ان میں تحریک انصاف سے شیریں مزاری، اے این پی سے افرا سیاب خٹک، پیپلز پارٹی سے رحمان ملک اور قمر زمان کائرہ، متحدہ قومی موومنٹ سے ڈاکٹر فاروق ستار اوربابر غوری، جے یو آئی اف سے اکرم خان درانی جماعت اسلامی سے صاحبزادہ طارق اللہ، قومی وطن پارٹی سے انیسہ زیب طاہر خالی، مسلم ليگ ضيا کے اعجاز الحق شامل ہيں۔ فاٹا کی نماءندگی غازی گلاب جمال کے ساتھ ایک اور رکن پارلیمنٹ کو بھی مل سکتی ہے۔ عوامی مسلم لیگ کے شیخ رشید مسلم لیگ ق سے مشاہد حسین بھی کمیٹی میں شامل ہیں۔ پشتونخوا ملی عوامی پارٹی سے محمود خان اچکزئی کا نام تجویز کیا جاسکتا ہے۔ کمیٹی میں قانون نافذ کرنے والے اور انٹیلی جنس اداروں کے حکام بھی شامل ہوںگے۔ کمیٹی دہشت گردی کے خلاف ایکشن پلان تیار کر کے ایک ہفتے میں اپنی رپورٹ وزیراعظم کو بھجوائے گی ۔

پرنٹ یا ایمیل کریں

Leave a comment