جمعہ, 30 اکتوبر 2020


جنید جمشید کی تلاش تاحال جاری

 


ایمزٹی وی(اسلام آباد)وزیر مملکت طارق فضل چودھری نے کہا ہے کہ جاں بحق ہونے والے مسافروں کے لواحقین کے ڈی این اے ٹیسٹ میں 6سے 8دن لگ سکتے ہیں اورمیتوں کے دوبارہ ڈی این اے سمپلز لیے جا رہے ہیں ۔”جنید جمشید کی میت کی ابھی تک شناخت نہیں ہو سکتی “۔

اسلام آباد میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ جاں بحق افرادکے والدین ، بہن بھائی اور اولاد ڈی این اے کے نمونے دے سکتے ہیں تاہم مرنے والوں کے کزن اور دیگر رشتے داروں کے نمونے نہیں لئے جائیں گے ۔

انہوں نے مزید کہا کہ23میتیں پمزمنتقل کردی گئیں ہیں جبکہ تمام میتوں کو 4منتخب ہسپتالوں میں رکھا جائے گا ۔ڈی این اے کے لیے جنید کے بھائی ہمایوں کے خون کے نمونے لیے گئے ہیں۔ہماری طرف سے ہر ممکن اقدامات کیے جا رہے ہیں ۔’’ جنید جمشید ملک کا بہت بڑا سرمایہ تھے‘‘ ۔

انہوں نے کہا کہ طیارہ حادثہ مٰیں 47 مسافر جاں بحق ہوئے ہیں جن میں سے 5 کی شناخت ہوگئی ہے۔

 

پرنٹ یا ایمیل کریں

Leave a comment