بدھ, 28 اکتوبر 2020


عدالت میں غلطی کی گنجائش نہیں

 

ایمزٹی وی(اسلام آباد) سپریم کورٹ میں پاناما کیس کی سماعت کے دوران بینچ کے
جسٹس عظمت سعید شیخ نے جماعت اسلامی کے وکیل توفیق آصف کو مخاطب کرتے ہوئے ریمارکس دیے کہ اس عدالت میں غلطی کی گنجائش نہیں ، فیصلے میں دیکھ لیں گے ۔
 
جماعت اسلامی کے وکیل نے دلائل کے آغاز میں ظفر علی شاہ کیس کا حوالہ دیا اور کہا کہ ظفر علی شاہ کیس میں نوازشریف کو فریق بنایا گیا تھا اور اس پر عدالت نے اعتراض کیا تھا مگر بات درست تھی جس پر جسٹس عظمت سعید شیخ نے ریمارکس دیے کہ عدالت نے فیصلے میں مبینہ کرپشن کا ذکر کیا ، مبینہ کرپشن کو فیصلہ نہیں کہہ سکتے ۔آپ نے فیصلہ بھی نہیں پڑھا اور حوالہ دے رہے ہیں ۔
 
سپریم کورٹ نے کہا ہے کہ رولز کے مطابق درخواست میں غلط بیانی کی کوئی گنجائش نہیں ہے ، دیکھنا ہے کہ جماعت اسلامی نے اپنی درخواست میں غلط بیانی تو نہیں کی ۔”
جماعت اسلامی کے وکیل نے جوا ب دیا کہ ”ظفر علی شاہ کے فیصلے کو پڑھوں گا “۔فیصلے میں ذکر ہے کہ لندن فلیٹس شریف خاندان کے تھے ۔

 

پرنٹ یا ایمیل کریں

Leave a comment