بدھ, 20 نومبر 2019


ایف بی آر اورفارن آفس کا فاصلہ مہینوں میں طے نہ ہوسکا

 

ایمزٹی وی(اسلام آباد)پاکستان تحریک انصاف کے ترجمان فواد چوہدری کا کہنا ہے کہ چیرمین نیب کو اگرادارے کا وقارعزیز ہوتا تو آج عدالت میں استعفیٰ دے کر جاتے لیکن نیب، چیرمین ایف بی آر اور دیگر ادارے وزیراعظم کے اشاروں پرناچ رہے ہیں۔
سپریم کورٹ کے باہر میڈیا سے بات کرتے ہوئے پاکستان تحریک انصاف کے ترجمان فواد چوہدری کا کہنا ہے کہ چیرمین ایف بی آرنے کہا کہ فارن آفس سے معلومات لے رہے ہیں، ایف بی آر اورفارن آفس کا فاصلہ مہینوں میں طے نہ ہوسکا، چیرمین نیب کو اگر ادارے کا وقارعزیزہوتا تو آج عدالت میں استعفیٰ دے کرجاتے لیکن نیب، چیرمین ایف بی آراوردیگر ادارے وزیراعظم کے اشاروں پرناچ رہے ہیں، آج عدالت نے نیب اورایف بی آرکے چئیرمین کو ذمہ داریاں یاد دلائیں جب کہ عمران خان کا اداروں سے متعلق کہا گیا ایک ایک لفظ بھی آج درست ثابت ہوا۔
فواد چوہدری نے کہا کہ عدالت نے نیب سے پوچھا کہ تفتیش کیوں نہیں کررہے جس پرچیرمین نیب خاموش رہے، چیرمین نیب نے عدالت میں کہا کہ ریگولیٹرز کا جواب آئے تو ہم کارروائی کریں گے۔ نیب وزیراعظم کے بچوں سے قانون کے مطابق تحقیقات کا آغاز کرے، جمہوریت کی طرف بڑھنا ہے تو وزیراعظم اوران کے اہلخانہ کا احتساب کرنا ہوگا، وزیراعظم نے اپوزیشن کے ایک سوال کا جواب نہیں دیا پھر بھی کہتے ہیں ہم جمہوری ہیں جب کہ وزیراعظم ، اسحاق ڈار،کیپٹن (ر) صفدر تینوں نے اثاثے چھپائے، انہیں نااہل کیا جائے۔

 

پرنٹ یا ایمیل کریں

Leave a comment