جمعہ, 05 مارچ 2021


کراچی لوڈشیڈنگ، وفاقی وزیر توانائی نے حکومت سندھ کو خط لکھ دیا

 

ایمزٹی وی(اسلام آباد)وفاقی وزیر توانائی اویس لغاری نے حکومت سندھ کو خط لکھ کر کے الیکٹرک کے واجبات کی ادائیگی کروانے کا مطالبہ کیا ہے۔
کراچی میں بجلی کی لوڈ شیڈنگ کے معاملے پر وفاقی وزیر توانائی اویس لغاری نے وزیر اعلی سندھ مراد علی شاہ کو خط لکھا ہے۔ اویس لغاری نے کہا کہ کراچی واٹر بورڈ کے ذمہ کے-الیکٹرک کے 32 ارب روپے ادا کیے جائیں، کے الیکٹرک کو رقم ملی تو وہ سوئی سدرن کے ساتھ اپنا مسئلہ حل کر سکتی ہے، واٹر بورڈ سے کے الیکٹرک کو رقم دلوانے میں وزیر اعلی اپنا کردار ادا کریں۔
اویس لغاری نے کہا کہ نیشنل الیکٹرک پاور ریگولیٹری اتھارٹی (نیپرا) کے مطابق کے الیکٹرک اپنے بند پاور پلانٹس تیل پر چلا سکتا تھا، نیپرا نے اپنی حالیہ رپورٹ میں یہ بھی کہا ہے کہ کراچی میں بجلی بحران کی وجہ ’کے الیکٹرک‘ کی بدانتظامی اور نااہلی ہے۔
کراچی میں کے الیکٹرک کی جانب سے چودہ چودہ گھنٹے کی لوڈ شیڈنگ جاری ہے جس کی وجہ سے شہریوں کو شدید پریشانی کا سامنا ہے۔ نیپرا کی ٹیم نے کراچی کا دورہ کرکے لوڈ شیڈنگ کی وجوہات کی تحقیقات کیں جس کے بعد نیپرا نے اپنی رپورٹ میں بجلی کے بحران کا ذمہ دار کے الیکٹرک کو قرار دیتے ہوئے اس کے خلاف قانونی کارروائی کا فیصلہ کیا ہے۔ نیپرا نے کہا کہ کے الیکٹرک نے کورنگی اور بن قاسم کے گیس پلانٹس پر متبادل فیول کا نظام موجود ہونے کے باوجود انہیں استعمال نہیں کیا جو غیر ذمہ دارانہ عمل ہے۔
 

 

پرنٹ یا ایمیل کریں

Leave a comment