منگل, 20 اکتوبر 2020


ریلوے اراضی کی فروخت سے متعلق کیس

اسلام آباد: ریلوے اراضی کی فروخت کے متعلق سپریم کورٹ آف پاکستان میں کیس کی سماعت کے دوران ساﺅنڈ سسٹم خراب ہوگیا۔جس پر چیف جسٹس جناب ثاقب نثار نے برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کمپنی کے سی ای او کو تلاش کرنے کا حکم دیا۔
سپریم کورٹ میں چیف جسٹس کی سربراہی میں ریلوے اراضی کی فرخت کے متعلق سماعت میں ریلوے کے وکیل اور دیگر عدالت میں پیش ہوئے۔وکیل درخواستگزار نے چیف جسٹس سے کہا ک وزیر ریلوے کہتے ہیں کے وہ ریلوے کی زمین بیچ کر ریلوے کو یونے والا خسارہ پورا کرے گے جس پر چیف جسٹس کا کہنا تھا کے ریلوے کو زمین بیچنے کا کوئی اختیار نہین ریلوے کو زمین مخصود مقاصد ک لیے فراہم کی گئی ہے۔
جس پر ریلوے کے وکیل نے کہا کہ ریوے کو زمین لیز پر دینے کی اتھارٹی نہیں ہے اور ہمیں اس متعلق بیان دینے کے لیے کچھ وقت درکار ہے۔ جس چیف جسٹس جناب ثاقب نثار نے وکیل سے کہا کے اب کیوں سارے قانون ےاد آگئے اتنے برسو سے کیا ہو رہا تھا۔ صدر مملکت سے زمین فرخت کرنے کی منظوری کیسے لے لی جاتی ہے صدر مملکت کے پاس اس بات کی اجازت دینے کا کوئی اختیار نہیں۔
چیف جسٹس نے کہا کے ہمارا نظام خراب ہوتا جارہا ہے ریلوے کیسے زمین فرخت کر سکتی ہے؟ انہوں نے کہا کے ایسے مقدمات رات 8سے 12بجے تک سنیں گے

 

 

پرنٹ یا ایمیل کریں

Leave a comment