ھفتہ, 28 نومبر 2020


سابق وزیراعظم نوازشریف نے اپنا بیان قلمبند کرانا شروع کردیا

 

اسلام آباد: العزیزیہ ریفرنس میں سابق وزیراعظم نوازشریف نے اپنا بیان قلمبند کرانا شروع کردیا ہے۔ احتساب عدالت کے جج ارشد ملک کی سربراہی میں العزیزیہ ریفرنس کی سماعت جاری ہے، سابق وزیراعظم نوازشریف نے اپنا بیان قلمبند کرانا شروع کردیا ہے، نوازشریف روسٹرم پر آکر سوالات کے جوابات ریکارڈ کرارہے ہیں۔ نواز شریف کا اپنے بیان میں کہنا ہے کہ تین بار ملک کا وزیر اعظم رہا، پرویز مشرف نے 12 اکتوبر 1999 کو مارشل لاءلگایا، مارشل لاءکے دوران کوئی عوامی عہدہ نہیں رکھتا تھا، 12 اکتوبر 1999 سے مئی 2013 تک کسی عوامی عہدے پر نہیں رہا۔ نواز شریف نے کہا کہ یہ تفتیشی کی رائے تھی کہ میں شریف خاندان کا سب سے با اثرشخص تھا، میرے والد میاں شریف آخری سانس تک خاندان کے سب سے با اثر شخص تھے۔ انہوں نے کہا ٹیکس ریٹرنز، ویلتھ اسٹیمٹمنٹس اور ویلتھ ٹیکس ریٹرن میں نے ہی جمع کروائے تھے، 2001 سے 2008 تک میں جلا وطن تھا جب کہ حسین نواز کے جمع کروائے گئے ٹیکس سے متعلق جواب دینے کامجاز نہیں تاہم میں نے اپنے اِنکم ٹیکس ریٹرن میں تمام اثاثے اور ذرائع آمدن ظاہر کیے۔

 

پرنٹ یا ایمیل کریں

Leave a comment