بدھ, 13 نومبر 2019


بھارت پاکستان کا قرض دار ہے

ایمزٹی وی(بزنس)بھارت پاکستان کا اڑسٹھ لاکھ روپے کا قرض دار نکلا تفصیلات کے مطابق اسٹیٹ بینک کے مطابق بھارت نے پاکستان کے ساڑھے پانچ ارب روپے ادا کرنے ہیں آزادی کے بعد پاکستان کے حصے میں آنے والا سرکاری خزانہ آج تک نہیں ملا1947 میں زیر گردش نوٹوں، برٹش انڈیا کے خزانے میں سے پاکستان کے حصے میں آنے والا سونا اور طلائی سکے بھارت نے آج تک دبائے رکھے ہیں۔ اسٹیٹ بینک کے مطابق ان اثاثوں کی مالیت اب 5ارب 45 کروڑ روپے ہے۔ اس طرح سقوط ڈھاکہ کے وقت بھی زیرگردش کرنسی اوردیگراثاثےبھی تاحال پاکستان کو نہیں ملے۔ اسٹیٹ بینک کے مطابق ان اثاثوں کی مالیت آٹھ ارب چھپن کروڑ روپے بنتی ہے۔ کل ملا کر بھارت اور بنگلہ دیش پاکستان کے چودہ ارب روپے کے مقروض ہیں۔ گزشتہ اڑسٹھ سال میں کسی بھی حکومت کی جانب سے بھارت اور بنگلہ دیش سے تقاضہ نہیں کیا گیا ، تاہم اسٹیٹ بینک اپنی بیلینس شیٹ میں ہرسال اس رقم کا ذکر کرتا ہے۔

پرنٹ یا ایمیل کریں

Leave a comment