جمعہ, 23 اگست 2019


کشمیری بم دھماکے کے بعد پاکستان کے خلاف ۔

بھارت نے پاکستان کے خلاف ایک خود کش بم دھماکے کے الزامات کی مذمت کی ہے جس میں کشمیر کے تنازعہ علاقے میں کم سے کم 40 ملزمان ہلاک ہوئے ہیں.بھارت کے مالیاتی وزیر ارون جیتی نے پاکستانی درآمدات میں 200٪ ٹیرف اور اتوار کو اعلان کردہ وزارت داخلہ کا اعلان کیا ہے کہ یہ کشمیر کے کئی متعدد رہنماو¿ں کی سلامتی کی تفصیلات نکال رہی تھی.کشمیر کے 30 سالہ بغاوت کی تاریخ کے سب سے طویل ترین حملے کے ذمہ دار ہیں جو پاکستان کے مبینہ عسکریت پسند گروہ جیش محمد کے ایک رکن کی طرف سے چلائے گئے دھماکہ خیز مواد سے لیس ایک کار ہے.دارالحکومت، دہلی، اور پورے ملک میں تقریبات منعقد کی گئیں تاکہ عوام کو غصہ جاری رکھے. وزیر اعظم نریندر مودی نے اتوار کو اتوار کو بہار ریاست میں ایک ناظرین کو بتایا کہ "آپ کے دلوں میں آگ لگانے والی آگ، میرے دل میں بھی ہے".ہندوستان کے گھریلو وزارت نے پولیس کو ہدایت کی ہے کہ کشمیریوں کو ہندوستان بھر میں ریاستوں میں مطالعہ یا کام کرنے کی حفاظت کے ل? انتقام کے حملوں کی رپورٹوں کے بعد شمالی شہر دیراڈون میں خواتین کے ہاسٹلوںکو ہتھیاروں کی طوفان کی کوششوں کی اطلاع دی جائے.حکام نے کشمیر میں موبائل انٹرنیٹ کم کر دیا اور سڑکیں اور مارکیٹوں کو اتوار کو ویران کردیا گیا کیونکہ رہائشیوں نے ایک عام ہڑتال کا مظاہرہ کیا جس کے نتیجے میں وہ تشدد کے خلاف احتجاج کا مظاہرہ کر رہے تھے.

پرنٹ یا ایمیل کریں

Leave a comment