اتوار, 27 مئی 2018


صوبے میں بجلی کی طلب اور رسد کی مکمل تفصیل عدالت کو بتائیں

 

ایمز ٹی وی (پشاور)چیف جسٹس نے پیسکو چیف کو ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ صوبے میں بجلی کی طلب اور رسد کی مکمل تفصیل عدالت کو بتائیں۔پشاور میں اسپتالوں اور اسکولوں کے دورے کے دوران چیف جسٹس صوبےمیں بجلی کی لوڈشیڈنگ پربھی برہم دکھائی دیئے اور کہا کہ رات سے یہاں موجود ہوں اس دوران 7 مرتبہ بجلی گئی۔

ادھر سپریم کورٹ پشاور رجسٹری میں پروٹوکول کیس کی سماعت میں چیف جسٹس نے آئی جی پختونخوا سے استفسار کیا کہ صوبے میں کتنے لوگوں کے پاس سکیورٹی موجود ہے؟

جس پر آئی جی نے جواب دیا کہ اس وقت صوبے میں 3 ہزار اہلکار ذاتی سکیورٹی پر مامور ہیں۔چیف جسٹس نے کہا جن کے پاس سب کچھ ہے وہ اپنے لیے سکیورٹی کا بھی خود انتظام کریں۔ آج دوپہر دو بجے تک سب سے اضافی سکیورٹی واپس لیں۔چیف جسٹس نے کہا آئی جی صاحب! آپ کا بہت نام سنا ہے آپ خود دیکھ لیں۔دوسری طرف چیف جسٹس نے لیڈی ریڈنگ اسپتال پشاور کا دورہ بھی کیا۔چیف جسٹس نے اسپتال میں مریضوں کو دی جانے والی سہولیات کا جائزہ لیا۔چیف جسٹس نے میڈیکل کالج کا دورہ کیا اور انتظامیہ کی سرزنش بھی کی۔

 

پرنٹ یا ایمیل کریں

Leave a comment