بدھ, 13 نومبر 2019


وزیرعلی امین گنڈاپورکی آزادی مارچ کےحوالےسے نیادعویٰ

وفاقی وزیر علی امین گنڈا پور نے دعوی کیا ہے کہ مولانا فضل الرحمان دھرنا نہیں دیں گے۔

ڈیرہ اسماعیل خان میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ مولانا نے قانون ہاتھ میں نہ لیا تومارچ پراعتراض نہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ کسی سطح پر کوئی پکڑ دھکڑ نہیں ہورہی تاہم اگر کسی نے قانون ہاتھ میں لیا توقانون حرکت میں آئے گا۔

علی امین نے کہا کہ مولانا فضل الرحمان الیکشن کوجعلی کہتے ہیں تو ان سے دوبارہ الیکشن لڑنے کا چیلنج قبول کریں ۔

جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے 25 جولائی 2018 کو ہونے والے عام انتخابات میں مبینہ دھاندلی ، معاشی بدحالی اور حکومتی ناہلی کے خلاف 27 اکتوبر سے حکومت کے خلاف اسلام آباد کی جانب مارچ شروع کرنے کا اعلان کر رکھا ہے۔

مولانا فضل الرحمان سے مذاکرات کے لیے حکومت نے وزیر دفاع پرویز خٹک کی سربراہی میں ایک کمیٹی بھی تشکیل دی ہے تاہم سربراہ جے یو آئی کا کہنا ہے کہ نہ انہیں کسی حکومتی کمیٹی کا علم ہے اور نہ ہی کسی نے ان سے رابطہ کیا ہے، مذاکرات صرف وزیراعظم کے استعفے کے بعد ہوں گے

پرنٹ یا ایمیل کریں

Leave a comment