منگل, 16 اکتوبر 2018


الیکشن 2018، انتخابی عملے رشوت نہ لینے کے لئےحلف اٹھائیں گے

 

 

ایمزٹی وی(اسلام آباد)الیکشن کمیشن نے ملکی تاریخ میں پہلی بار انتخابی عملے سے حلف لینے کا فیصلہ کیا ہے۔

الیکشن کمیشن نے پولنگ عملے کیلیے ہدایات جاری کر دی ہیں جس کے مطابق پولنگ شروع ہونے سے قبل پریذائیڈنگ افسران ہر ضلع کے ریٹرننگ افسر سے عہدے کا حلف لیں گے، الیکشن کمیشن کے مطابق پریذائیڈنگ افسر پولنگ کے باقی عملہ سے حلف لیں گے جبکہ انتخابی عملے کو پولنگ کے وقت سے کم از کم 2 گھنٹے پہلے پولنگ اسٹیشن پر پہنچنے کی ہدایت کی گئی ہے۔

الیکشن کمیشن کا کہنا ہے کہ پولنگ عملے کو امیدوار کی جانب سے مالی معاونت یا تحفے کو رشوت تصور کیا جائیگا جبکہ پولنگ عملے پر فرائض کی ادائیگی کے دوران سیاسی رائے کے اظہار پر بھی پابندی ہوگی۔ 

الیکشن کمیشن کے مطابق پولنگ عملہ ایسا لباس یا علامت اختیار نہ کرے جس سے کسی جماعت سے وابستگی ظاہر ہو جب کہ فرائض میں کوتاہی کے مرتکب عملے کیخلاف الیکشن کمیشن براہ راست کارروائی کرسکے گا اور خلاف ورزی کا مرتکب عملہ 30 روز میں سروس ٹریبونل یا عدالت میں اپیل دائر کر سکے گا۔

 

پرنٹ یا ایمیل کریں

Leave a comment