بدھ, 11 دسمبر 2019


مضر صحت دودھ کیس کاروائی 4 ہفتوں تک ملتوی


ایمزٹی وی(لاہور)سپریم کورٹ نےغیرمعیاری اور مضر صحت دودھ کیس کی سماعت کےدوران ملکی اور غیر ملکی ڈبہ بند دودھ کے لیبارٹری تجزیے کا حکم دیدیا۔ اپنے ریمارکس میں عدالت نے کہا کہ میرے اور قوم کے بچوں کی صحت کا معاملہ ہے، ماہرین اللہ کو حاضر ناظر جان کے بلا خوف ایمانداری سے رپورٹ تیار کریں۔

سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں غیرمعیاری اورمضر صحت دودھ کی خرید و فروخت کے خلاف کیس کی سماعت کے دوران عدالت نے تمام ملکی اور ملٹی نیشنل کمپنیوں کے ڈبہ بند دودھ کے لیبارٹری تجزیے کا زرعی یونیورسٹی فیصل آباد ،ویٹرنری یونیورسٹی لاہور اور پی سی ایس آئی آر کے ماہرین کو حکم دیا۔

سپریم کورٹ کے جسٹس میاں ثاقب نثار نے اپنے ریمارکس میں کہا کہ ہر گھر میں بچہ دودھ پیتا ہے، یہ میرے اور قوم کے بچوں کی صحت کا معاملہ ہے، ماہرین ایمانداری سے بلاخوف و رعایت رپورٹ تیار کریں۔ اس کے علاوہ اوپن مارکیٹ سے بھی دودھ خریدکر ماہرین کو فراہم کیا جائے۔عدالت نےکہا کہ یہ ذمہ داری حکومت کی ہے مگر عدلیہ کو کام کرنا پڑ رہا ہے۔ عدالت نے حیدررسول مرزا ایڈووکیٹ کو اس سلسلے میں کوآرڈینیٹر مقرر کردیا ۔

عدالت نے مضر صحت دودھ کیس پر مزید کاروائی 4 ہفتوں تک ملتوی کردی۔

پرنٹ یا ایمیل کریں

Leave a comment