ھفتہ, 06 جون 2020
لاہور :لاک ڈاؤن میں طلبا و طالبات کی سہولت کے پیش نظر بی ایس سی انجینئرنگ اوربی ایس سی انجینئرنگ ٹیکنالوجی میں داخلے کیلئے رجسٹریشن کی آخری تاریخ میں ایک دن کی توسیع کر دی گئی
 
اب طلبا و طالبات آج 2جون تک یو ای ٹی کے ویب پورٹل پر آن لائن رجسٹریشن کر سکیں گے ۔

 لاہور: ہیلتھ یونیورسٹی کے زیر اہتمام ایم بی بی ایس اور بی ڈی ایس کے مارچ میں کورونا کے باعث ملتوی کئے گئے ضمنی امتحانات کا آغاز ہوگیا

گزشتہ روز پہلا پرچہ میڈیسن کاہوا جس میں پنجاب اور آزاد کشمیر کے 37میڈیکل کالجز سے 275 امیدواروں نے شرکت کی۔

مکمل ایس او پیز کے ساتھ 10امتحانی مراکز بنائے گئے ، لاہور میں 131 امیدواروں نے امتحان دیا، فرسٹ ایئر ایم بی بی ایس کے 6جون ، فرسٹ ایئر بی ڈی ایس کے 10جون اور فورتھ ایئر ایم بی بی ایس کے سپلیمنٹری امتحانات 13جون کو اختتام پذیر ہونگے ۔

لاہور: اسکول انفارمیشن سسٹم پر پنجاب بھر کے 30 ہزار سے زائد اساتذہ کا ڈیٹا درست نہ ہوسکا ، محکمہ تعلیم نے ڈیٹا کی درستی کیلئے اسکول سربراہوں کو آخری وارننگ جاری کردی۔
 
لاہور کے 205 اساتذہ، 8 اسکول سربراہان اور 89 ریٹائرڈ اساتذہ کا ڈیٹا غلط ہے ۔اسکول ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ نے اساتذہ کے ڈیٹا کی درستی کیلئے اتھارٹیز کو ایک بار پھر مراسلہ جاری کردیا ہے ۔
اسکول ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ کا کہنا ہے سکول انفارمیشن سسٹم پر اساتذہ ڈیٹا فوری درست کیا جائے ،15 جون تک ڈیٹا درست نہ کیا گیا تو اساتذہ کی تنخواہیں روک دی جائینگی۔

کراچی : بین الاقوامی مرکز برائے کیمیائی و حیاتیاتی علوم (آئی سی سی بی ایس) جامعہ کراچی کے تحت فضائی حادثے کے شکار مسافروں کی سوختہ لاشوں کی تشخیص کا عمل سندھ فرانزک ڈی این اے اور سیرولوجی لیبارٹری نے مکمل کرلیا۔کراچی : بین الاقوامی مرکز برائے کیمیائی و حیاتیاتی علوم (آئی سی سی بی ایس) جامعہ کراچی کے تحت فضائی حادثے کے شکار مسافروں کی سوختہ لاشوں کی تشخیص کا عمل سندھ فرانزک ڈی این اے اور سیرولوجی لیبارٹری نے مکمل کرلیا۔

بلوچستان کے دارالحکومت کوئٹہ میں تھری اور فور جی انٹرنیٹ سروس پراسرار طور پر بند کردی گئی۔

ذرائع کے مطابق کوئٹہ میں گذشتہ شب موبائل انٹرنیٹ سروس اچانک بند کردی گئی اور تاحال سروس بند کرنے کی وجوہات معلوم نہ ہوسکیں۔

 اس حوالے سے رابطہ کرنے پر محکمہ داخلہ بلوچستان، ڈپٹی کمشنر کوئٹہ اور حکومت بلوچستان کے ترجمان لیاقت شاہوانی نے لاعلمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ حکومت بلوچستان نے کوئٹہ میں تھری او ر فور جی سروس بند نہیں کی اور نہ ہی ایسی کوئی سفارش وفاقی حکومت کو بھیجی گئی ہے البتہ وفاقی حکومت کی جانب سے اگر یہ اقدام کیاگیا ہے تو اس متعلق علم نہیں ہے۔

 دوسری جانب اچانک سروس بندش کی وجہ سے عوام کو تشویش اور مشکلات کا سامنا کرنا پڑا جب کہ پی ٹی اے کے ترجمان سے متعدد بار رابطہ کرنے کی کوشش کی گئی تاہم ان سے رابطہ نہ ہوسکا۔

کراچی: محکمہ تعلیم کی اسٹیرنگ کمیٹی نے فیصلہ کیا ہے کہ تمام سرکاری اور نجی تعلیمی اداروں میں تدریسی عمل کی کوئی اجازت نہیں ہوگی البتہ اگر نجی تعلیمی ادارے آن لائن ایجوکیشن شروع کرنا چاہتے ہیں تو انہیں اس کی اجازت ہوگی.
 
نجی اسکولز اگر اپنے اساتذہ اور غیر تدریسی عملہ کو بلوانا چاہتے ہیں تو ان کو محکمہ صحت کی جاری کردہ ایس او پیز پر عمل پیرا ہونا ہوگا.
 
 سعید غنی کاکہنا ہےکہ پالیسی اور اسکولز کھولنے کے ساتھ ساتھ جو نجی اسکولز پہلی تا آٹھویں جماعت تک کے ان بچوں کو اگلے درجوں میں ترقی دینے پر تحفظات رکھتے ہیں، جن کے تعلیمی نتائج اس معیار کے نہیں ہیں اس پر نظرثانی کے لئے ایک سب کمیٹی بنادی گئ ہے، جو تمام صورتحال کا جائزہ لے کر اپنی تجاویز پیش کرے گی.

نویں جماعت کی طالبہ نے آن لائن کلاس چھوٹنے پر خود کشی کرلی۔

بھارتی میڈیا کے مطابق واقعہ ریاست کیریلا کے ایک گاؤں میں پیش آیا جہاں گھر پر ٹیلی ویژن اور اسمارٹ فون کی سہولت نہ ہونے کے باعث طالبہ کی آن لائن کلاس مس ہوگئی جس پر اس نے دلبرداشتہ ہوکر خود کو آگ لگالی۔

بھارتی میڈیا کا بتانا ہےکہ 14 سالہ دیویکا دوپہر سے لاپتا تھی جس کی سوختہ لاش اس کے پڑوس میں ایک خالی گھر سے ملی جب کہ لڑکی کے کمرے سے ایک پرچہ بھی ملا جس میں صرف اتنا لکھا تھا کہ ’میں جارہی ہوں‘۔

لڑکی کے والد نے بتایا کہ وہ ایک ڈیلی ویجز ملازم ہے اور خرابی صحت کی وجہ سے کچھ عرصے سے کام کرنے کے قابل نہیں۔

بھارتی میڈیا کےمطابق لڑکی کے والد کا کہنا تھا کہ ان کی بیٹی آن لائن کلاس نہ لینے کی وجہ سے کافی مایوس تھی، وہ کئی مرتبہ آن لائن کلاس لینے کے لیے ٹی وی کو ٹھیک کرانے کا کہہ چکی تھی مگر پیسے نہ ہونے کی وجہ سے ٹیلی ویژن ٹھیک نہیں ہوسکا اور ہمارے پاس اسمارٹ فون بھی نہیں۔

دوسری جانب ریاست کے وزیر تعلیم نے طالبہ کی موت پر تحقیقات کا حکم دیا ہے۔

سماجی رابطوں کے مقبول ترین پلیٹ فارم فیس بک نے حال ہی میں صارفین کے لیے ایک نئی ایپ متعارف کرائی ہے جس کا نام 'وینیو' ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق فیس بک کی نئی پروجیکٹ تجربہ کرنے والی ٹیم نے حال ہی میں ایک ایپ 'وینیو' متعارف کرائی ہے۔

کمپنی کے مطابق یہ ایپ صارفین کو آن لائن براہ راست ایونٹس دکھانے میں مددگار ثابت ہوگی جب کہ لائیو ایونٹس کے دوران ایپ صارفین کو سوالات، پول اور لائیو چیٹ کرنے کا تجربہ بھی فراہم کرے گی۔

یہ ایپ ایونٹس کی میزبانی کے لیے نہیں ہے بلکہ اس کے ذریعے سے صارفین کو ایونٹ کے دوران ایک دوسرے سے بات چیت کرنے کا موقع مل سکے گا۔

خیال رہے کہ 'وینیو' ایپ فیس بک کی جانب سے ایک ہی ہفتے میں متعارف کرائی جانے والی تیسری ایپ ہے، اس سے قبل فیس بک نے سب سے پہلے ایک ویڈیو بنانے والی ایپ اور وائس کالز سے متعلق ایپ متعارف کرائی تھی۔

کراچی:وزیر تعلیم و محنت سندھ سعید غنی کی زیرصدارت محکمہ تعلیم کی اسٹیرنگ کمیٹی کا اجلاس جاری ہے.

اجلاس میں سیکرٹری تعلیم سید خالد حیدر ، سیکرٹری کالجز باقر نقوی ، سیکرٹری یونیورسٹیز محمد ریاض الدین، تمام بورڈز کے چئیرمینز، میڈم شہناز وزیر علی، تمام پرائیویٹ اسکولز ایسوسی ایشن کے چیئرمینز و عہدیداران شامل ہیں.

اجلاس میں کلاس تعلیمی بورڈ کے طلبہ کو بغیر امتحان پاس کرنے ، پروموشن کے حوالے سے سب کمیٹی کی سفارشات کی منظوری دی جائے گی

اجلاس میں اسکول و کالجز میں تدریسی عمل کے حوالے سے تمام اسٹیک ہولڈرز سے مشاورت کی جائے گی.

 
 
 
 
نیویارک: سماجی رابطے اور مائیکروبلاگنگ کی ویب سائٹ ٹویٹر نے کرونا سے متعلق غلط معلومات یا متنازع ٹویٹ کرنے والے صارفین کے گردگھیرا تنگ کرنے کا فیصلہ کرلیا۔
 
ٹویٹر کی جانب سے ایک روز قبل اعلان کیا گیا ہے کہ کووڈ 19 (کرونا) کے حوالے سے غلط معلومات یا متنازع ٹویٹس کرنے والے صارفین کے ٹویٹس کو لیبلز دیے جائیں گے اور ایسے صارفین کو پیغام بھیج کر خبردار کیا جائے گا۔
 
کمپنی کی جانب سے جاری اعلامیے کے مطابق اس اقدام کا مقصد سوشل میڈیا پلیٹ فارم پر غلط اور بے بنیاد معلومات کو روکنا ہے، مستقبل میں اس کا دائرہ کار وسیع کر کے کرونا کے علاوہ دیگر موضوعات کو بھی شامل کیا جائے گا۔
 
 
 
ٹویٹر کی جانب سے جن ٹویٹر کو مختلف رنگوں کے لیبلز دیے جائیں گے اُن کے نیچے وجہ ایک لنک کے ذریعے بیان کی جائے گی تاکہ دیگر صارفین الجھن یا غلط فہمی کا شکار نہ ہوسکیں۔
 
کمپنی نے اپنے تازہ بلاگ میں بتایا کہ اُن ٹویٹس پر لیبلنگ کی جائے گی جن کی وجہ سے زیادہ نقصان پہنچنے کا اندیشہ ہے، ایسے ٹویٹس کو ڈیلیٹ اس لیے نہیں کیا جائے گا کہ صارفین کو غلط معلومات پھیلانے والوں کے بارے میں آگاہی ملتی رہے اور وہ ایسے اکاؤنٹس سے محتاط رہیں۔
 
 
 
کمپنی نے مزید بتایا کہ ٹوئٹس کے مواد کے مطابق انتباہ کا اضافہ کیا جائے گا جن میں کہا جائے گا کہ یہ ٹوئٹ عوامی طبی ماہرین کی رہنمائی سے متضاد ہے۔ ٹویٹر کی نئی پالیسی کا اطلاق اُن ٹویٹس پر بھی ہوگا جو پہلے پوسٹ کیے جاچکے ہیں۔
 
 
 
کمپنی کی عوامی پالیسی کی ڈائریکٹر نک پلکز کا کہنا تھا کہ جعلی خبروں کی روک تھام کے حوالے سے ہماری حکمت عملی دیگر کمپنیوں سے مختلف ہے کیونکہ ہمیں تھرڈ پارٹی کا انتظار نہیں کرنا ہوگا، لیبلز زیادہ تیزی سے کسی بھی ٹویٹ کو اجاگر کریں گے۔
Page 1 of 2696