جمعرات, 06 اکتوبر 2022


آوازانسٹیٹیوٹ کےزیرِاہتمام جلسہ تقسیم اسنادکاانعقاد

کراچی: آواز انسٹیٹیوٹ آف میڈیا اینڈ مینجمنٹ سائنس کے زیرِ اہتمام جلسہ تقسیم اسناد منعقد کیا گیا۔

ایمز انسٹیٹیوٹ کے سالانہ جلسہ تقسیم اسناد میں بی ایس ماس کمیونیکشن، بی بی اے(بی ایس بی اے) اور ایم ماس کمیونکیشن کے 59 طلباو طالبات میں ڈگریاں تفویض کی گئیں۔

سالانہ جلسہ تقسیم اسناد میں مہمانِ خصوصی سینیٹرنثار احمد کھوڑو،جامعہ کراچی کے وائس چانسلر ڈاکٹر خالد محمود عراقی، چیئرمین بورڈآف گورنر آواز انسٹیٹیوٹ نئیر علی،ر ضیاء الدین بورڈ کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر ڈاکٹر ناصر انصار،ڈی جی چارٹر کمیٹی نعمان احسن، سیکرٹری الحاق کمیٹی ڈاکٹر انیلا امبر ملک۔ فیکلٹی ممبران،اساتذہ اورجامعہ کراچی شعبہ کمپیوٹر سائنس و سافٹ انجینئرنگ کےڈین ندیم محمود،ویژول اسٹڈیز کی انچارج تانیہ ناصر، شعبہ ابلاغ عامہ کی چیئرپرسن ڈاکٹرفوزیہ نازاورہیڈآف دی ڈیپارٹمنٹ بی بی اے ڈاکٹر دانش شریک ہوئے۔

 

سینیٹرنثار احمد کھوڑو:
تقریب سے خطاب کرتے ہوئے سینیٹر نثاراحمد کھوڑو نے کہا کہ ہمارے نوجوان اور بنیادی طور پر طلباء ہمارا اثاثہ ہیں کیونکہ انہیں مستقبل میں پاکستان کی ترقی کی قیادت کرنی ہے۔انہوں نے کہا کہ چھوٹے شہروں اور اضلاع کو بھی نجی شعبے کی توجہ کی ضرورت ہے کیونکہ ان میں جامعات نہیں ہیں اور ان کے لیے معیاری تعلیم حاصل کرنا مشکل ہے۔
انکا مزید کہنا تھا کہ اکثر اوقات چھوٹے شہروں اور اضلاع کے لوگوں کو اپنے آبائی شہر چھوڑ کر دوسرے شہروں میں جانا پڑتا ہےاس لئے میں پرائیوٹ سیکٹر کے عہدیداروں سے گزارش کرتا ہوں کہ وہ ہائر ایجوکیشن کے لئے بہتر سے بہتر اقدامات کرے ۔
سینیٹر نثار احمد کھوڑو نے کہا کہ ہم معیاری تعلیم کی فراہمی اور سب کو یکساں مواقع فراہم کرکے اور میرٹ کلچر کو فروغ دے کر معاشرے میں مثبت تبدیلیاں لاسکتے ہیں۔انہوں نے کہا تعلیم دنیامیں نام کرنے کےلئے محنت کرنا ضروری ہے اور تعلیم ہی طبقاتی نظام کو نہیں مانتی ۔

وائس چانسلر خالد عراقی:
شیخ الجامعہ پروفیسر خالد محمود عراقی نے کہا کہ گریجویٹس کے پاس مسابقتی کارپوریٹ دنیا میں سبقت حاصل کرنے کے لیے ضروری مہارتیں اور صلاحیتیں ہوتی ہیں۔ صرف ایک پروگرام سے شروع ہونے والے انسٹی ٹیوٹ نے ان تمام سالوں میں قابل ذکر کام کیا ہے اور درست سمت میں آگے بڑھ رہا ہے۔ان کا ماننا ہے کہ فارغ التحصیل اب اپنی تعلیم کے دوران حاصل کیے گئے علم اور ہنر کو بروئے کار لا کر معاشرے کی خدمت کے لیے تیار ہیں.

چیئرمین بورڈ آف گورنرز نیئرعلی :
12سال قبل جب ہم نے ایمز کی بنیاد رکھی تو ہمارا مقصدتعلیم و تربیت کے جدیدتقاضوں کےسنگِ میل کوعبورکرنا تھا کیونکہ ہم جانتے ہیں تعلیم ہی ترقی کی کنجی ہےاور الحمداللہ! ہم اپنے مشن میں کافی حد تک کامیاب بھی ہوئے ہیں اور ہماری کوشش ہوگی کہ ہم آنے والے دنوں میں مزید بہتری لےکر آئے جوہمارے طلبا و طالبات کےبہترین مستقبل میں مفیدثابت ہونگے ۔
انہوں نے مزید کہا کسی بھی ملک وقوم کی ترقی کےلئے ضروری ہے کہ نوجوانوں کو تعلیم کے بہترین مواقع میسر ہوں لیکن بدقسمتی سےہمارے ملک کا صرف 3فیصد نوجوان طبقہ ہی اعلیٰ تعلیم حاصل کرپاتا ہےجوہماری ترقی کےلئےانتہائی ناکافی ہے۔آج کے اس پرُ مسرت موقع پرہم عہد کرتےہیں کہ ہم اپنے ادارے آواز انسٹیٹیوٹ میں زیرِ تعلیم طلبا و طالبات کوجدید تعلیم سےآراستہ کریں گے۔

ریکٹر آواز انسٹیٹیوٹ ڈاکٹر سلیم شہزاد:
آواز انسٹیٹیوٹ کے ریکٹر ڈاکٹر سلیم شہزاد نے جلسہ تقسیم اسناد کے موقع پرمہمان ِ خصوصی سینیٹر نثار کھوڑو، شیخ الجامعہ پروفیسر خالد محمود عراقی،بورڈ آف گورنرز، ایمز فیکلٹی ممبران ، والدین، ڈین فیکلی آف آرٹس وفنون ڈاکٹر نصرت ادریس، چارٹرانسپیکشن اینڈ ایوویلیشن (سندھ سی آئی ای سی) نعمان احسن کا شکریہ ادا کیا۔

اس موقع پر انہوں نے کہا کہ میں جامعہ کراچی کے وائس چانسلر پروفیسر خالد محمود عراقی کا شکریہ ادا کرتا ہوں کہ انہوں نے آواز انسٹیٹیوٹ کو تعلیمی اقدام میں بھر پور تعاون کیا اور میں امید کرتا ہوں کہ آئندہ بھی جامعہ کراچی بھر پور ساتھ دے گا جو خامیاں ہیں انہیں دور کرنے کی کوشش کریں گے۔آخر میں انہوں نےڈگری اور شیلڈ وصول کرنے والے طلبا کو مبارکباد دی۔

پرنٹ یا ایمیل کریں

Leave a comment