منگل, 21 جنوری 2020


اسکول فیسوں کے حوالے سے حکومتی اقدامات نظرانداز

کراچی: رکنِ سندھ اسمبلی جمال صدیقی نے پرائیویٹ اسکولز کا فیسوں  کے حوالے سےحکومتی اقدامات کو نظر انداز کرنے پر  اسمبلی میں توجہ دلاؤ نوٹس جمع کرادیا۔

جمال صدیقی  کا کہنا تھا کہ حکومتی احکامات پر کچھ ہی دن عملدرآمد ہوا اُس کے بعد سب نے اپنی من مانی شروع کردی ہےاور ایک بار پھر بیکن ہاؤس اور دیگر پرائیویٹ اسکولز ڈبل ٹرپل فیسیں وصول کر رہے ہیں۔ 

 اُ نھوں نے کہا کہ جب بچوں نے آگے پڑھا ہی نہیں تو ایڈوانس فیس کیوں دیں۔ پرائیویٹ اسکولز اس طرح من مانی کریں گے تو  سفید پوش خاندانوں کا کیا ہوگا۔ 

 اُنھوں نے کہا کہ اس پرائیویٹ اسکول میں منصور صدیقی بیس سال سے بیٹھے ہیں اُنھیں کوئی بلانے والا نہیں۔ اُنھوں نے وزیرِ تعلیم سے گزارش کی کہ اس معاملے پر اسکولز انتظامیہ اور ڈائریکٹر اسکولز کو طلب کر کے باز پُرس کی جائے  تاکہ والدین کو اس اضافی بوجھ سے نجات دلائی جاسکے۔

پرنٹ یا ایمیل کریں

Leave a comment