جمعرات, 30 مئی 2024
×

Warning

JUser: :_load: Unable to load user with ID: 46


تھر: غذائی قلت کے باعث جاںبحق ہونے والے بچوں کی تعدد اٹھائیس ہوگئی

ایمز ٹی وی (تھر) تھر کےباسیوں کی مشکلات کم نہ ہو سکیں، چھاچھرو اور ڈاھلی ایک سو چودہ ٹیوب ویل ناکارہ ہونے کی وجہ سے پانی کا بحران سنگین ہو گیا۔ ایک طرف خشک سالی اور قحط دوسری جانب بیماری اور پانی کا بحران ،غذائی قلت کے مارے بچے موت کی وادی میں اتر رہے ہیں ۔ دیہی علاقوں سے لائے گئے غذائی قلت سے متاثرہ بچوں کا سول ہسپتال مٹھی کے نیوٹریشن وارڈ میں علاج کیا جا رہا ہے۔ ہسپتال ذرائع کے مطابق سول ہسپتال مٹھی میں غذائی قلت سے بیمار 30 بچے زیر علاج ہیں جن میں سے 2 کی حالت تشویشناک ہونے پر حیدر آباد منتقل کر دیا گیا ہے جبکہ نرسری وارڈ میں زیر علاج مزید دو بچوں کی حالت تشویشناک بتائی جا رہی ہے دوسری طرف جو زندہ ہیں انہیں پانی نہیں مل رہا ۔ چھاچھرو اور ڈاھلی تحصیل میں 114 ٹیوب ویل ناکارہ ہونے کے بعد پانی کا بحران شدت اختیار کر گیا ۔ 75 سے زائد ٹیوب ویلوں کے آلات بھی غائب ہیں۔ چھاچھرو انتظامیہ کو ملنے والی دو کروڑ کی گرانٹ شہر کیلئے 7 سال کے عرصے میں پانی کی فراہمی کا مسلہ حل نہ کر سکی ۔ شہری پانی خرید کر استعمال کرنے پر مجبور ہیں ، حتی کہ نقل مکانی کرنے والے قافلوں کو بھی پانی فراہم نہیں کیا جا رہا۔ رواں ماہ غذائی قلت کے باعث جانی کی بازی ہارنے والے بچوں کی تعدد اٹھائیس تک جا پہنچی ہے۔

پرنٹ یا ایمیل کریں

Leave a comment