جمعہ, 31 مئی 2024


سندھ بھرکی جامعات بند اورتدریسی سرگرمیاں معطل کرنےکافیصلہ

کراچی: ملک بھرکی سر کاری جامعات کے اساتذہ کی تنظیم فپواسا سندھ چیپٹر نےکل یوم سیاہ اور تمام یونیورسٹیز میں جمعرات کو کلاسز کا بائیکاٹ کرنے کا فیصلہ کیاہے۔

سر کاری جامعات کے اساتذہ نمائندوں کی تنظیم فپواسا سندھ چیپٹر نے سیکریٹری یونیورسٹیز اینڈ بورڈز مرید راہیمو کی جانب سے جامعہ کراچی میں سلیکشن بورڈ ملتوی کرانے کے عمل کو مسترد کرتے ہوئے انہیں فوری ہٹانے اور ساتھ ہی اس حوالے سے جاری خط واپس لینے کا مطالبہ کیا ہے اگر مطالبات فوری تسلیم نہ کیے گئے تو کل سندھ کی تمام جامعات میں یوم سیاہ منایا جائے گا اورجمعرات کو اکیڈمک سرگرمیوں کا مکمل بائیکاٹ کردیا جائے گا جبکہ اسی دن آئندہ کا لائحہ عمل جاری ہوگا۔

اس کا اعلان فپواسا سندھ چیپٹر کے صدر ڈاکٹر نیک محمد اور شاہ علی القدر سمیت دیگر رہنمائوں نے جامعہ کراچی میں منعقدہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا
رہنماؤں نے کہا کہ سیکریٹری یونیورسٹیز اینڈ بورڈز کی جانب سے لکھا گیا خط جامعہ کراچی سمیت دیگر جامعات کی خود مختاری پر کاری ضرب ہے اس سے سندھ میں اعلی تعلیم کا حرج ہوگا اساتذہ نے کہا کہ کوئی جامعات کسی صورت سیکریٹری یاسندھ حکومت سے سلیکشن بورڈ کی اجازت نہیں لے گی۔
شاہ علی القدر نے کہا کہ جامعات ایکٹ کے تحت چلائی جاتی ہیں سیکریٹری یونیورسٹیز اینڈ بورڈز نے ایکٹ کی خلاف ورزی کرتے ہوئے سندھ اسمبلی اور اس کے نمائندوں کی توہین کی ہے سندھ گورنمنٹ کو سیکریٹری سے باز پرس کرنی چاہیے۔

انہوں نے کہا کہ جامعہ کراچی اساتذہ کی بھرتیوں کے لیے جو اشتہار دیتی ہے اس کے لئے ہزاروں درخواستیں پورے ملک سے موصول ہوتی ہیں یہ کہنا غلط ہے کہ یہاں اوپن کمپیٹیشن نہیں ہوتا۔رہنماؤں نے پریس کانفرنس میں سندھ یونیورسٹی میں محکمہ اینٹی کرپشن کی مداخلت کی بھی مذمت کی۔

اساتذہ رہنماؤں نے کہا کہ نواب شاہ یونیورسٹی کے وائس چانسلر نے ایک استاد کا زبردستی تبادلہ کرکے ان کی ایک سال سے تنخواہ بھی روکی ہوئی ہے۔
رہنماؤں کا کہنا تھا کہ این ای ڈی یونیورسٹی میں روٹیشن پالیسی پر عمل کیا جائے اور مدت مکمل کرنے والے چیئرمینز کو ہٹایا جائے۔

پرنٹ یا ایمیل کریں

Leave a comment