پیر, 27 مئی 2024

 

ایمزٹی وی(جڑانوالہ)سابق وزیراعظم کی صاحبزادی مریم نواز نے کہاہے کہ وفا کیا ہوتی ہے ، یہ کوئی جڑانوالہ سے پوچھے ، وہ جڑانوالہ کے عوام کو سلام پیش کرتی ہیں جنہوں نے مسلم لیگ ن کو طلال چوہدری جیسا وفادار دیا۔
جڑانوالہ میں جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے مریم نواز نے کہاکہ جڑانوالہ کی محبت ساری زندگی یادرہے گی،نوازشریف سے تین نسلوں کا حساب لیاگیا لیکن نوازشریف کیخلاف ایک پیسے کی کرپشن ثابت نہیں ہوئی ، عوام کی عدالت سب سے بڑی عدالت ہوتی ہے ، جڑانوالہ کے لوگوں نے مشکل وقت میں نوازشریف کاساتھ دیا،
جڑانوالہ اورفیصل آبادسے جیت ہمیشہ(ن)لیگ کی ہوتی ہے۔انہوں نے کہاکہ آپ سے چند سوال کروں گی ، اس کا جواب دیں، سزا پہلے،مقدمے بعد میں چلائے جائیں،کیا آپ کو ایسا پاکستان منظور ہے؟کرپشن نہ ڈھونڈپانے پراقامہ پرنکال دیا جائے،کیا آپ کوایسا پاکستان چاہیے؟70 سال میں ایک بھی منتخب وزیر اعظم مدت پوری نہ کر پائے اور استفسار کیا کہ منتخب وزیر اعظم کو انصاف نہ ملے،کیا آپ کو ایسا پاکستان منظور ہے؟اللہ تعالیٰ کے بعدسب سے بڑی عدالت عوام کی ہوتی ہے، جڑانوالہ نے پاکستان اور نوازشریف کے ہاتھ مضبوط کیے ، پاناما میں نواز شریف کا نام نہیں تھا۔

 

 

ایمزٹی وی(کراچی) آصف زرداری کے قریبی دوست اور سابق وفاقی وزیر ڈاکٹرعاصم کے خلاف میگا کرپشن کیس کی سماعت کے دوران استغاثہ کے گواہ نے کہا ہے کہ سابق مشیرِ پیٹرولیم کے نجی بینک اکاؤنٹ سے لندن رقم منتقل ہوتی رہی ہے۔
میڈیا ذرائع کے مطابق کراچی کی احتساب عدالت میں سابق مشیرِ پیٹرولیم ڈاکٹرعاصم کے خلاف 462 ارب روپے کرپشن ریفرنس کی سماعت ہوئی۔ سماعت کے دوران نجی بینک (یوبی ایل) کے ملازم مصباح الدین نے ڈاکٹرعاصم کے بیرون ملک کرنسی اکاؤنٹ کا ریکارڈ جمع کراتے ہوئے اپنا بیان بھی قلمبند کرایا۔
 
گواہ نے عدالت کو بتایا کہ ڈاکٹر عاصم نے اپنے یو بی ایل اکاؤنٹ کے ذریعے مختلف اوقات میں حبیب بینک لندن برانچ میں رقم منتقل کی اور یہ رقم زیادہ تر غیرملکی کرنسی تھی جو 2012 کے بعد منتقل ہوئی۔
عدالت نے گواہ کے بیان پر ڈاکٹرعاصم کے وکیل سے 21 دسمبرکو دلائل طلب کرتے ہوئے کیس کی سماعت ملتوی کردی جب کہ ڈاکٹرعاصم کی حاضری سے استثنیٰ کی دخواست بھی منظور کرلی گئی۔

 

 

ایمز ٹی وی(پجاب)تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہا ہے کہ پارٹی کومخالفین سے زیادہ اندر کے لوگوں سے خطرہ ہے،کارکنوں سے گفتگو کرتے ہوئے عمران خان کا کہناتھا کہ نوازشریف اور آصف زرداری میں کوئی فرق نہیں،دونوں کا لوٹنے کا طریقہ مختلف مگر مقصد ایک ہے،انہوں نے کہا کہ عوام میں شعور آگیا ہے۔

 

 

ایمزٹی وی(ریاض)برطانوی اخبار نے انکشاف کیا ہے کہ کرپشن کے الزام میں گرفتارسعودی امراکو الٹا لٹکاکر تشدد کر کے تفتیش کی جارہی ہے،کھرب پتی شہزادہ الولیدبن طلال کوبھی الٹالٹکاکرتشددکانشانہ بنایاگیا،برطانوی اخبارکی خصوصی رپورٹ کے مطابق سعودی عرب میں کرپشن کے الزام میں گرفتار شہزادوں پرامریکی کنٹریکٹرز تشدد کرکے پوچھ گچھ کررہے ہیں،کھرب پتی شہزادہ الولید بن طلال کو بھی الٹا لٹکا کر تشدد کا نشانہ بنایا گیا،فائیواسٹارہوٹل کے باہرسعودی اوراندرنجی سیکیورٹی کمپنی کے اہلکارتعینات ہیں۔
سعودی شہزادے الولید بن طلال کو میٹنگ کاکہہ کرمحل بلایاگیاتھا،انہیںرات پونے3بجے کمرے سے گھسیٹ کرہتھکڑی لگائی گئی اور مجرم کے طور پر پوچھ گچھ کی گئی،برطانوی اخبار کے مطابق شہزادہ الولیدبن طلال کوبتایاگیاکہ دنیاکوتمام الزامات سے آگاہ کردیاگیا ہے۔
برطانوی اخبار کا کہناہے کہ سعودی عرب میں3ہفتے پہلے11شہزادوں اورسینکڑوں امراکوگرفتارکیاگیاتھا،گرفتارافرادکے بینک کھاتوں سے194ارب ڈالرضبط کئے جاچکے ہیں۔
برطانوی اخبارکے مطابق سعودی امرا سے تفتیش کیلئے بلیک واٹر کی خدمات حاصل کی گئی ہیں اور اس کی موجودگی کا عرب سوشل میڈیا اور لبنانی صدر نے ایک ٹوئٹ میں کیا تھا،لیکن بلیک واٹر کے حکام نے سعودی عرب میں موجودگی کی سختی سے تردید کی ہے ۔

 

 

ایمز ٹی وی (اسلام آباد) چیئرمین تحریک انصاف عمران خان کا کہنا ہے کہ سپریم کورٹ میں جمع ایک بھی دستاویز غلط ثابت ہوئی تو میں سیاست چھوڑ دوں گا۔ کوہاٹ میں میڈیا نمائندوں سے بات کرتے ہوئے پی ٹی آئی چیئرمین نے کہا کہ لندن فلیٹ بیچ کر پیسہ قانونی طور پر ملک میں لایا اور اس کی 60 صفحات کی ۔ دستاویزات سپریم کورٹ میں جمع کرائی ہیں تاہم اس میں سے ایک بھی چیز غلط ثابت ہوئی تو خود سیاست چھوڑ دوں گا۔ عمران خان کا کہنا تھا ' اگر نواز شریف منی ٹریل دیتے تو کیوں نکالا نہ کہتے پھرتے اور نہ ہی یہ کہتے کہ عوام میرا احتساب کرے گی بلکہ عوام احتساب نہیں کرتی، کارکردگی پر ووٹ دیتی ہے۔

انہوں نے کہا کہ نواز شریف 30 سال سے عوام کو بیوقوف بنا رہے ہیں، انہوں نے 300 ارب ملک سے باہر بھیجے جب کہ سپریم کورٹ میں ان کی جانب سے جمع کرایا گیا قطری خط بھی فراڈ نکلا ہے۔ قومی اسمبلی میں نااہل شخص کے پارٹی سربراہ بننے پر پابندی کا بل مسترد ہونے کے حوالے سے عمران خان نے کہا کہ نااہل شخص کو پارٹی چیئرمین بنانے والے 160 ارکان قومی اسمبلی شرم سے ڈوب مریں، قوم کا پیسا چوری کرنیوالے نااہل آدمی کوکون اپنا سربراہ بناتا ہے؟ انہوں نے کہا کہ ہم پولیس میں کسی قسم کی سیاسی مداخلت نہیں ہونے دیتے اور ہمارا کام بہترین آئی جی کو صوبے میں لگانا تھا۔

عمران خان کا کہا کہ خیبرپختونخوا پولیس کی کارکردگی میں بہتری آئی ہے جس سے لوگوں کو فائدہ ہو رہا ہے اور رواں سال پچھلے 10 سال میں سب سے پرامن سال رہا ہے۔

چیئرمین تحریک انصاف کا کہنا تھا کہ یہ نیا خیبر پختونخوا ہے جس میں سیاستدان بلٹ پروف شیشے کے بغیر جلسوں سے خطاب کر رہے ہیں، چند سال پہلے تک اس کا تصور تک نہ تھا، اسفند یار ولی تو صوبہ چھوڑ کر چلے گئے تھے اور آج وہ جلسوں سے خطاب کر رہے ہیں۔ ڈی آئی خان واقعے سے متعلق ان کا کہنا تھا کہ سیاسی مخالفین نے بہت بڑا ڈرامہ کیا لیکن کیس میں نامزد 9 میں سے 8 ملزمان کو 24 گھنٹے میں گرفتار کیا گیا جب کہ میں نے خود 24 گھنٹے کے اندر آئی جی پولیس کو کال کی اور واقعے کے بارے میں پوچھا۔

 

 

ایمز ٹی وی (اسپورٹس) بھارت میں میچ فکسرز کے خلاف گھیرا تنگ کرنے کی تیاریاں شروع ہوگئیں جب کہ بھارتی بورڈ کے سابق صدر انوراگ ٹھاکر نے کھیل میں کرپشن کی روک تھام کیلیے بل پارلیمنٹ میں پیش کردیا۔ بھارتی کرکٹ بورڈ کے صدر اور حکمران جماعت بی جے پی کے رہنما انوراگ ٹھاکر نے ایک پرائیویٹ ممبر بل پارلیمنٹ میں جمع کرایا ہے جس میں انھوں نے میچ فکسنگ میں ملوث شخص کو 10 برس کے لیے جھیل میں ڈالنے کی تجویز دی ہے، ساتھ میں فکسنگ کیلیے دی جانے والی رقم کا پانچ گنا جرمانہ لگانے کی بھی سفارش کی گئی ہے۔ یہ بل موسم سرما کے پارلیمنٹ سیشن کے دوران پیش کیا جائے گا۔ انوراگ ٹھاکر نے یہ بھی مطالبہ کیا ہے کہ تمام اسپورٹس فیڈریشن کے لیے ایک مرکزی ایتھک کمیٹی بنائی جائے جہاں پر ڈوپنگ، میچ فکسنگ، عمر کے حوالے سے فراڈ، خواتین کو حراساں کرنے سمیت تمام معاملات کا جائزہ لیا جائے، انھوں نے یہ تجویز بھی پیش کی کہ اس کمیٹی کو سول کورٹ جتنے اختیارات حاصل ہونا چاہئیں، اس کمیٹی کے ممبران کی تعداد 6 ہو جن میں سے 4 سپریم یا پھر ہائیکورٹ کے ریٹائرڈ ججز ہونا چاہئیں، ساتھ میں انھوں نے کمیٹی ممبران کے لیے چیف جسٹس سے مشاورت کی بھی تجویز دی۔ انوراگ ٹھاکر کا کہنا تھاکہ بھارتی آئین میں کسی بھی میچ فکسر کیلیے کوئی باقاعدہ سزا موجود نہیں ہے، اس لیے وہ پکڑے جانے پر آسانی سے خود کو کلیئر کرالیتا ہے، نئے قانون کی موجودگی میں فکسرز کو سخت سزا دلانا ممکن ہوجائے گا۔

 

ایمزٹی وی(اسلام آباد)پاکستان تحریک انصاف کے چیرمین عمران خان کا کہنا ہے کہ اسحاق ڈار کو شریف خاندان کی منی لانڈرنگ کے مزید راز فاش ہونے کے ڈر سے نہیں ہٹایا جارہا۔
سماجی رابطے کی سائٹ ٹوئٹر پر پاکستان تحریک انصاف کے چیرمین عمران خان نے وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کو نواز شریف کا کٹھ پتلی قرار دیا۔ انہوں نے کہا کہ تعجب کی بات ہے کہ نواز شریف کا کٹھ پتلی وزیراعظم شاہد خاقان عباسی شریف مافیا کے فرنٹ مین اور قانون سے بھاگے ہوئے شخص کو عہدے سے نہیں ہٹا سکتا۔
عمران خان کا کہنا تھا کہ شریف مافیا کے دباؤ کے باعث وزیر خزانہ اسحاق ڈار کو نہیں ہٹایا جا رہا، کیونکہ شریف مافیا کو اسحاق ڈار کی جانب سے منی لانڈرنگ کے مزید انکشافات کا ڈر ہے۔
 
تحریک انصاف کے چیرمین نے کہا کہ اسحاق ڈار کرپشن اور منی لانڈرنگ جیسے کئی مقدمات میں مطلوب مفرور ملزم ہے، اسحاق ڈار نے پہلے بھی نواز شریف کی منی لانڈرنگ کے بارے میں انکشافات کیے تھے اور اب بھی شریف خاندان کی منی لانڈرنگ کے مزید راز فاش ہونے کے ڈر سے انہیں عہدے سے نہیں ہٹایا جارہا۔

 

ایمزٹی وی(اسلام آباد) قومی احتساب بیورو کے چیرمین نے پنجاب حکومت کی 56 کمپنیوں میں اربوں کی کرپشن کی تحقیقات کا حکم دے دیا۔
میڈیا ذرائع کے مطابق چیئرمین نیب جسٹس ریٹائرڈ جاوید اقبال نے پنجاب حکومت کی 56 پبلک لمیٹڈ کمپنیوں میں بدعنوانی اور من پسند بھرتیوں سے متعلق شکایات کا نوٹس لے لیا۔ چیرمین نیب کے مطابق پبلک لمیٹڈ کمپنیوں میں بدعنوانی، وسائل کے بے دریغ استعمال اور پراکیورمنٹ (سامان کی خریداری) میں بے قاعدگیوں سمیت دیگر شکایات مل رہی تھیں۔
چیئرمین نیب نے شکایات کا نوٹس لیتے ہوئے ڈی جی نیب لاہور کو متعلقہ 56 پبلک لمیٹڈ کمپنیوں کے معاملات کی انکوائری کرنے کا حکم دے دیا۔ چیئرمین نیب جسٹس ریٹائرڈ جاوید اقبال نے ہدایت کی کہ نیب کی انکوائری کی وجہ سے کسی بھی کمپنی کو کام سے نہ روکا جائے اور اس وقت تک کام کرنے دیا جائے جب تک ان کے خلاف ثبوت اکٹھے نہ ہوجائیں، اس سلسلہ میں تمام قانونی تقاضوں کو مدنظر رکھا جائے۔
واضح رہے کہ پنجاب حکومت کی کمپنیوں میں 80 ارب روپے کی میگا کرپشن کیخلاف دائر درخواست پر لاہور ہائیکورٹ میں سماعت بھی جاری ہے۔ عدالت نے اس سلسلے میں تمام کمپنیوں کے سربراہوں اور فریقین کو نوٹس جاری کرتے ہوئے پنجاب حکومت سے وضاحت بھی طلب کی ہے۔

 

 

ایمزٹی وی(ریاض)کرپشن کے الزام میں گرفتار 11 سعودی شہزادوں، وزرا اور حکومتی عہدیداروں سمیت تمام افراد کے بینک اکاؤنٹس منجمد کردئیے گئے۔
سعودی عرب میں کرپشن کے الزام میں گرفتار تمام افراد کے بینک اکاؤنٹس منجمد کردئیے گئےہیں۔ سعودی عرب کے مرکزی بینک کے مطابق گرفتارافراد کی کمپنیاں معمول کے مطابق کام کررہی ہیں اور ملک میں جاری کرپشن کے خلاف مہم کا اثرمعیشت پر نہیں پڑے گا۔ سعودی مرکزی بینک کی جانب سے جاری کیے جانے والے مراسلے میں ہدایت کی گئی ہے کہ تمام کمپنیاں اور بینک معمول کے مطابق کام جاری رکھیں۔
سعودی ولی عہد محمد بن سلمان نے تمام وزرا کو ہدایت جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ تمام کمپنیاں معیشت میں اہم کردارادا کررہی ہیں، سرمایہ کاروں کا اعتماد بحال رکھنا سب سےاہم اور ضروری ہے۔
واضح رہے کہ تین روز قبل سعودی عرب میں ولی عہد شہزادے محمد بن سلمان کی سربراہی میں بننےوالی کمیٹی نے کرپشن اور منی لانڈرنگ کے خلاف کھرب پتی شہزادے الولید بن طلال سمیت 11 شہزادوں، 4 وزرا اور درجنوں سابق وزرا گرفتار کرلیےتھے۔ شہزادوں کی گرفتاری کی خبر نے دنیا بھر کے میڈیا کو ہلاکر رکھ دیا۔ گرفتار ہونےوالے شہزادوں اور دیگراہم شخصیات کو سعودی عرب کے مشہور زمانہ ’’رٹز کارلٹن‘‘ہوٹل میں نظر بند کیا گیا ہے جہاں ان سے تفتیش کا عمل جاری ہے۔

 

 

ایمزٹی وی(لاہور)قومی احتساب بیورو (نیب) کے چیرمین جسٹس ریٹائرڈ جاوید اقبال نے کہا ہے کہ ارباب عالمگیر، عاصمہ ارباب اور اسلم رئیسانی کیخلاف تحقیقات جلد مکمل کی جائیں گی۔
زرائع کے مطابق چیئرمین نیب جسٹس ریٹائرڈ جاوید اقبال نے کہا ہے کہ پیپلز پارٹی کے سابق وفاقی وزیر ارباب عالمگیر، ان کی اہلیہ و سابق رکن قومی اسمبلی عاصمہ ارباب اور سابق وزیراعلیٰ بلوچستان اسلم رئیسانی کیخلاف تحقیقات جلد مکمل کی جائیں گی۔ ملزمان کیخلاف آمدن سے زائد غیرقانونی اثاثے بنانے اور گوادر میں زمینوں کی ناجائز الاٹمنٹس کے الزامات ہیں۔
جسٹس ریٹائرڈ جاوید اقبال نے کہا کہ بدعنوانی کا خاتمہ میری اولین ترجیح ہے، کرپشن کے خلاف زیرو ٹالرنس کی پالیسی پر سختی سے عملدرآمد کیا جائے گا اور تمام نیب تحقیقات کو قانون و ٹھوس شواہد کی بنا پر جلد پایہ تکمیل تک پہنچا دیا جائے گا۔

 

Page 5 of 16